عوام بتا, سکتے, ہیں کہ وہ اپنی زندگی, سے مطمئن, ہیں یا نہیں

عوام بتا سکتے ہیں کہ وہ اپنی زندگی سے مطمئن ہیں یا نہیں

بھوٹان: یہاں تک کہ آبادی کے مردم شماری کے سوالنامے میں ایک کالم بھی شامل کیا گیا ہے جس میں عوام بتا سکتے ہیں کہ وہ اپنی زندگی سے مطمئن ہیں یا نہیں

سب سے بڑھ کر بھوٹان میں ‘منسٹری آف ہیپی نیس’ یعنی ‘وزارت برائے خوشی’ بھی موجود ہے، جی ڈی پی یعنی گراس ڈومیسٹک پراڈکٹ کے طرز کی اصطلاح ‘گراس نیشنل ہیپی نیس’ رائج ہے۔
اس کا مقصد معیار زندگی کو عوام کی مالی اور ذہنی اعتبار سے جانچنا ہے۔
بھوٹان اپنی چند دیگر خصوصیات کی وجہ سے بھی دنیا میں منفرد ہے جیسے کہ ؛
بھوٹان میں 1999 تک سرکاری طور پر ٹی وی اور انٹرنیٹ پر پابندی تھی، چونکہ دنیا سے کٹ کر رہنا ممکن نہیں تھا اس لیے بادشاہ نے اس قانون کو ختم کر دیا اور یوں بھوٹان ٹی وی کا استعمال کرنے والا دنیا کا سب سے آخری ملک بنا۔
بھوٹان میں کوئی بھی شخص بے گھر نہیں ہے، اگر کوئی شخص اپنا گھر کھو دیتا ہے تو وہ بادشاہ کے پاس درخواست لیکر جاتا ہے اور اس کے بعد اسے گھر بنانے کے لیے زمین مل جاتی ہے۔
اس کے علاوہ ایک اور اچھی چیز یہ بھی ہے کہ بھوٹان میں عوام کے لیے طبی سہولیات بالکل مفت ہیں۔
بھوٹان میں تمباکو کی افزائش، فروخت اور استعمال سب کچھ قانوناً جرم ہیں۔
اس کے ساتھ بھوٹان میں ایک اور دلچسپ چیز یہ ہے کہ یہاں کے دارالحکومت تھمپو میں ٹریفک سگنلز موجود نہیں ہیں، ٹریفک پولیس اہلکار ہاتھ کے اشاروں سے ٹریفک کنٹرول کرتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

ریاست جارجیا کے حراستی مراکز میں قید خواتین کے ’رحم مادر‘ نکالے جانے کا اسکینڈل

ریاست جارجیا کے حراستی مراکز میں قید خواتین کے ’رحم مادر‘ نکالے جانے کا اسکینڈل

امریکا: اسکینڈل اس وقت سامنے آیا جب ریاست جارجیا کی ارون کاؤنٹی کے ایک حراستی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے