دنیا کا امیر ترین شخص بل گیٹس مچھر سے خوفزدہ

مائیکرو سافٹ کے بانی نے اپنے حالیہ بلاگ میں انکشاف کیا ہے کہ ’’مجھے شارک مچھلی سے ڈر نہیں لگتا البتہ میں جس سے سب سے زیادہ خوف زدہ ہوں وہ شے مچھر ہے‘‘۔

انہوں نے کہا کہ ’’اگر موازنہ کیا جائے تو شارک مچھلی دیگر چھوٹی چیزوں کے مقابلے میں خوفزدہ کرنے والی شے نہیں لگتی‘‘۔

اس پوسٹ میں انہوں نے سال 2015 میں جانوروں کی ہلاکتوں سے متعلق ایک تفصیلی چارٹ بھی شائع کیا جس میں دکھایا گیا ہے کہ پورے سال کے دوران دنیا بھر کے سمندروں میں بسنے والی صرف 6 شارک مچھلیاں ہلاک ہوئی جبکہ مچھروں نے 8 لاکھ 30 ہزار افراد کی جانیں لیں۔

بل گیٹس کا کہنا ہے کہ ’’مچھر ایک ہائپو ڈرمک سوئی کی طرح ہے جو جسم کو بیماریوں سے بچانے والے میکنزم کو بائی پاس کر کے پٹھوں اور گوشت کو  بائی پاس کر کے امراض پیدا کرتا ہے، جس کے نتیجے میں جسم میں مختلف بیماریاں پیدا ہوتی ہیں‘‘۔

مائیکرو سافٹ کے بانی نے اپنے بلاگ میں مچھروں سے پھیلنے والی بیماریوں کے حوالے سے فہرست شائع کی ہے جن میں ڈینگی، زرد بخار، زکا اور سب سے خطرناک بیماری ملیریا شامل ہے۔

ملیریا کے بڑھتے ہوئے وائرس پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے بل گیٹس نے کہا کہ ’’یہ ممکنہ طور پر انسانی تاریخ کی سب سے اہم بیماری ہے جسے عام طور پر نظر انداز کیا جاتا ہے‘‘۔

انہوں نے مزید کہا کہ ’’میرے خیال میں یہ ننھے مچھر جنہیں ہم ایک ہاتھ سے مار دیتے ہیں یہ دراصل بہت طاقت ور ہیں کیونکہ مچھر کسی بھی چیز کے مقابلے میں سب سے زیادہ انسانی جانوں کو ختم کرنے کا سبب بن چکے ہیں‘

یہ بھی پڑھیں

آلہ ایجاد کیا گیا ہے جو سانس اور پھیھڑوں کے کئی جان لیوا امراض کی شناخت کرسکتا ہے

آلہ ایجاد کیا گیا ہے جو سانس اور پھیھڑوں کے کئی جان لیوا امراض کی شناخت کرسکتا ہے

مشی گن: ہزاروں لاکھوں لوگ ’اکیوٹ ریسپائریٹری ڈسٹریس سنڈروم‘ یعنی اے آر ڈی ایس کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے