امریکانےکیوباکیلئےنئی پالیسی کااعلان کردیا

امریکہ کی نینشل سیکیورٹی ایڈوازرسوزین رائس نے بتایاکہ نئی پالیسی میں وسیع تعلقات،تعاون اوردونوں ملکوں کےلیےمواقع موجود ہیں

سوزین رائس کا کہناہے کہ نئی پالیسی کےتحت امریکہ سےکیوبا کو محدود برآمدات اور امریکی فرمزکوکیوبا میں انسانی بنیادوں پرانفراسٹرکچرکی تعمیر کی اجازت ہوگی۔

نیشنل سیکیورٹی ایڈوائزرنے امریکی کانگریس سےکیوباپرسےپابندی کےخاتمے کامطالبہ بھی کیا۔ان کاکہناتھاکہ کیوباکےساتھ تجارتی تعلقات کوختم کرنا امریکہ کے حق میں نہیں ہوگا۔

خیال رہے کہ امریکہ نے کیوبا میں 1961 کے انقلاب کے بعد کیمونسٹ رہنما فیدل کاسترو کے اقتدار میں آنے کے بعد سفارتی تعلقات توڑ لیے تھے اور اس پر تجارتی پابندیاں عائد کر دی تھیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ سال امریکہ اور کیوبا کے درمیان سفارتی تعلقات 50 برس سے زائد عرصے کے بعد باضابطہ طور پر دوبارہ بحال ہو گئے تھے۔ امریکی صدر براک اوباما نے گزشتہ سال دسمبر میں دونوں ممالک میں تعلقات بہتر بنانے کا تاریخی اعلان کیا تھا۔

واضح رہےکہ صدراوباما کی کیوبا کےساتھ تعلقات بحالی کی پالیسی کوامریکہ میں شدید تنقید کا سامنا ہے،صدارتی امیدوار ہلیری کلنٹن براک اوباماکی پالیسی کاتسلسل چاہتی ہیں جبکہ ڈونلڈٹرمپ نے صدرمنتخب ہونے کی صورت میں پالیسی میں ردوبدل کاعندیہ دیاہے۔

یہ بھی پڑھیں

سعودی عرب، بچوں کے برتھ سرٹیفیکٹ نہ بنوانے والے پاکستانیوں کے لیے بڑی خوش خبری

سعودی عرب، بچوں کے برتھ سرٹیفیکٹ نہ بنوانے والے پاکستانیوں کے لیے بڑی خوش خبری

ریاض: سعودی عرب میں مقیم پاکستانی جو اپنے بچوں کا پیدائشی سرٹیفیکٹ نہیں بنوا سکے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے