سیلاب, اور, لینڈ سلائیڈنگ سے ,شدید نقصان

سیلاب اور لینڈ سلائیڈنگ سے شدید نقصان

انڈونیشیا: مقامی انتظامیہ کا کہنا تھا کہ صوبہ بینگکولو کے 9 اضلاع میں سیلاب اور لینڈ سلائیڈنگ سے شدید نقصان پہنچا ہے جہاں 13 ہزار سے زائد افراد بے گھر ہوگئے ہیں جبکہ سیکڑوں عمارتوں، پلوں اور سڑکوں کو نقصان پہنچا ہے

تازہ صورت حال سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ ‘جلدی بیماریوں، صفائی نہ ہونے کے باعث معدے میں انفیکشن اور صاف پانی کی عدم فراہمی کی وجہ سے ثانوی بحران جنم لے چکا ہے’۔
متاثرہ علاقوں سے حاصل ہونے والی تصاویر اور ویڈیوز میں دیکھا جاسکتا ہے کہ صوبے کے چند علاقوں میں سیلاب دریا کی شکل میں داخل ہورہا ہے۔
حکومت کی جانب سے امدادی کام کا سلسلہ جاری ہے اور متاثرین کے لیے کیچن اور پناہ گاہوں کا انتظام کیا گیا ہے جہاں تقریباً 13 ہزار متاثرین کو رکھا گیا ہے جبکہ امدادی کارکن متاثرہ علاقوں تک پہنچنے کے لیے کشتیوں کی مدد سے کوششوں میں مصروف ہیں
سوٹوپو پورو نوغروہو کا کہنا تھا کہ ‘سڑکوں کو نقصان پہنچا ہے جس کے باعث امدادی اشیا پہنچانے میں مشکلات کا سامنا ہے تاہم سڑکوں کو بحال کرنے کے لیے کام جاری ہے’۔
انڈونیشیا میں مون سون سیزن میں لینڈ سلائیڈنگ اور بارشوں سے سیلاب معمول ہے جہاں اکتوبر سے اپریل کے دوران شدید بارشیں ہوتی ہیں۔
انڈونیشیا دنیا کے ان چند مممالک میں سے ایک ہے جو اکثر تباہ کن زلزلوں، سیلاب اور سونامی کی زد میں رہتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

افغان صدر پر چیف ایگزیکٹیو کا الزام

افغان صدر پر چیف ایگزیکٹیو کا الزام

افغانستان کے چیف ایگزیکٹیوعبداللہ عبداللہ نے صدر اشرف غنی پر انتخابی مہم کے دوران سرکاری …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے