امریکا پابندیاں ہٹائے اور معافی مانگے تو مذاکرات پر راضی ہیں، ایران

امریکا پابندیاں ہٹائے اور معافی مانگے تو مذاکرات پر راضی ہیں، ایران

تہران: 

ایران کے صدر حسن روحانی نے کہا ہے کہ امریکا ایران سے معافی مانگے اور اقتصادی پابندیاں ہٹائے تو مذاکرات کے لیے تیار ہیں۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق ایرانی صدر حسن روحانی نے امریکا سے مذاکرات کو اقتصادی پابندیاں ختم کرنے اور معافی مانگنے سے مشروط کرتے ہوئے کہا ہے کہ مذاکرات برابری کی بنیاد پر ہونے چاہیئے، ایران اپنی سالمیت پر سودے بازی نہیں کرے گا۔

ایرانی صدر حسن نے مزید کہا کہ جس طرح ہم امن کے خواہاں ہیں اور مذاکرات کے لیے تیار ہیں اسی طرح ہم اپنا دفاع کرنے کی مکمل صلاحیت اور جنگ کی طاقت رکھتے ہیں۔ امریکا کے آگے گھٹنے نہیں ٹیکیں گے۔

دوسری جانب ایران کے روحانی پیشوا آیت اللہ خامنہ ای نے امریکی پالیسیوں کو دنیا کو یرغمال بنانے کی کوشش قرار دیتے ہوئے کہا کہ پابندیوں پر سخت جواب دیئے بغیر امریکا ان اقدامات سے باز نہیں آئے گا۔ ایران اپنی ضرورت کے تحت تیل کی فروخت جاری رکھے گا۔

واضح رہے کہ امریکی صدر ٹرمپ نے ایران سے تیل خریدنے والے ممالک کو حاصل اقتصادی پابندیوں پر حاصل استثنیٰ کو ختم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ایرانی تیل برآمد کرنے والے ممالک بھی پابندیوں کی زد میں آئیں گے۔

سعودی فرمانروا اور ولی عہد کی یوکرین کے نئے صدر کو مبارک باد

یہ بھی پڑھیں

امریکا میں جشن آزادی کی تقریبات کے بعد ملک میں وبا کی صورت حال مزید خراب ہو گئی

امریکا میں جشن آزادی کی تقریبات کے بعد ملک میں وبا کی صورت حال مزید خراب ہو گئی

واشنگٹن: امریکی میڈیا کے مطابق جشن آزادی کی تقریبات کے بعد ملک میں وبا کی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے