ریاست کے, 40 لاکھ سے, زیادہ ووٹروں کو, شہریت کی, فہرست سے باہر, رکھا گیا

ریاست کے 40 لاکھ سے زیادہ ووٹروں کو شہریت کی فہرست سے باہر رکھا گیا

آسام: ان باشندوں کی شہریت کا حتمی فیصلہ آئندہ چند مہینوں میں ہونےوالا ہے شہریت کا سوال آسام کے انتخابات کا سب سے اہم اور انتہائی حساس سوال ہے

آسام میں غیرقانونی بنگلہ دیشی باشندوں کی شناخت کے لیے شہریوں کی جو عبوری فہرست، این آر سی جاری کی گئی ہے اس میں ان کے خاندان کے سبھی لوگوں کا نام ہے لیکن رفیق اور ان کی ماں کا نام اس میں شامل نہیں ہے۔
اس الیکشن میں ووٹ دینے جا رہے ہیں لیکن وہ آئندہ الیکشن میں ووٹ دے پائیں گے یا نہیں انھیں نہیں معلوم۔ ‘میں تو اسی گاؤں کا ہوں اسی دیش کا شہری ہوں۔ اگر حتمی این آر سی میں ہمارا نام نہیں آیا تو کیا ہوگا؟’
پڑوس کے آٹھ گاؤں کی 16 ہزار آبادی میں چار ہزار سے زیادہ باشندوں کے نام شہریت سے باہر رکھے گئے ہیں۔ ان میں گریجوشین کی طالبہ 18 سالہ سمیرالنسا بھی شامل ہیں ۔ وہ کہتی ہیں: ‘میرا نام پہلی لسٹ میں تھا لیکن دوسری لسٹ میں میرا نام کاٹ دیا گیا۔ مجھے نوٹس ملا ہے کہ میں ‘ڈکلیرڈ فارینر’ ہوں۔ میں بہت تناؤ میں میں ہوں کہ میرا کیا ہوگا۔ اس تناؤ میں میرا امتحان خراب ہو گیا ہے۔
آر ایس ایس مسلم کو دوسرے درجے کا شہری بنانا چاہتی تھی۔ اب اس کو این آرسی کی شکل میں ایک ایسا ہتھیار مل گیا ہے جوشہریت سے خارج کرنے کا ڈیوائس ہے۔ بی جے پی اسے ایک مسلم مخالف ٹول کے طور پر استمعال کرنا چاہتی ہے جو کہ سپریم کورٹ کی گائد لائنز کے منافی ہے۔
اگر فری اور فیئر این آرسی ہوتا ہے تو میرے خیال میں زیادہ لوگ شہریت کی فہرست سے خارج نہیں ہونگے۔ اگر یہ منصفانہ نہیں ہوا تو بہت سے شہریوں کے نام بھی اس میں نہیں آئیں گے جس کا ہمیں ڈر ہے کہ یہاں کی حکومت دانستہ طور پر بہت سے لوگوں کوباہر رکھے گی۔
حزب اختلاف کی جماعت کانگریس کا کہنا ہے کہ بی جے پی ریاست کے اس حساس اور انسانی مسئلے کو سیاسی مقاصد کے لیے استعمال کر رہی ہے۔ پارٹی کا کہنا ہے کہ وہ بی جے پی کے مجوزہ شہریت کے ترمیمی بل کی مخالفت کرے گی۔

یہ بھی پڑھیں

دبئی ائیر شو 2019 کا آغاز ؛ پاکستان سمیت 160 ممالک کی شرکت

دبئی ائیر شو 2019 کا آغاز ؛ پاکستان سمیت 160 ممالک کی شرکت

دبئی میں سالانہ ائیر شو 2019 کا آغاز ہوگیا ، ائیر شو میں پاکستان سمیت …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے