حکومت کو, بایو پلانٹس, لگانے, پر سبسڈی دینی, چاہیئے

حکومت کو بایو پلانٹس لگانے پر سبسڈی دینی چاہیئے

کراچی: لوگ اپنے گھروں یا علاقوں میں بایو گئس پلانٹس کے ذریعے متبادل توانائی حاصل کرنے کے خواہشمند ہیں لیکن لوگوں کی اکثریت کے پاس پلانٹس لگانے کے لیے پیسے دستیاب نہیں

محکمہ توانائی نے صوبے کے ان علاقوں میں متبادل توانائی کو فروغ دینے کے لیے بایو گیس پلانٹس لگانے کے منصوبے پر کام شروع کردیا ہے
ابتدائی طور پر یہ منصوبہ صوبے کے تین اضلاع میں شروع کرنے کا پروگرام تشکیل دیا گیا ہے جن میں شکارپور، لاڑکانہ اور کراچی کے بعض گاﺅں شامل ہیں، یہ گاﺅں کراچی کے ضلع ملیر، شرقی اور غربی میں واقع ہیں۔
تجرباتی طور پر ان اضلاع میں150 بایو گیس پلانٹس لگائے جائیں گے جس کے بعد اس منصوبے کو صوبے کے دیگر اضلاع میں بھی متعارف کیا جائے گا۔
بایو گیس پلانٹس مال مویشیوں کے گوبر کے ذریعے گیس پیدا کرتے ہیں، ویسے تو یہ ٹیکنالوجی ملک میں پہلی مرتبہ 1974 میں متعارف کرائی گئی تھی لیکن حکومتی سرپرستی حاصل نہ ہونے کے باعث یہ متبادل توانائی مہیا کرنے والی یہ ٹیکنالوجی ابھی تک عام نہیں ہوسکی ہے جس کے باعث ملک کے اکثر دیہات میں جہاں قدرتی گئس کی سہولت میسر نہیں ہے مقامی لوگ درختوں کی کٹائی کرکے کھانا پکانے اور دیگر گھریلو ضروریات پوری کرنے کے لیے لکڑی جلاتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

ہم ساؤتھ ایشیا کا سب بڑا بائیو ٹیکنالوجی سینٹر بنارہے ہیں

ہم ساؤتھ ایشیا کا سب بڑا بائیو ٹیکنالوجی سینٹر بنارہے ہیں

کراچی: مستقبل میں بجلی کی ترسیل کھمبوں اور تاروں کی بجائے گرین انرجی سے ہوگی۔ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے