حمزہ شہباز کی, ذمہ داری, تھی کہ, وہ نیب کے, ساتھ تعاون, کرتے

حمزہ شہباز کی ذمہ داری تھی کہ وہ نیب کے ساتھ تعاون کرتے

اسلام آباد: فواد چوہدری نے کہا کہ حمزہ شہباز کی ذمہ داری تھی کہ وہ تعاون کرتے، انہوں نے تعاون کے بجائے نیب کی ٹیم کو تشدد کا نشانہ بنایا

ان کا کہنا تھا کہ اداروں پر حملہ کرنا مسلم لیگ(ن) کی روایت رہی ہے، ماضی میں ن لیگ نے سپریم کورٹ اور اب نیب پر حملہ کیا۔
فواد چوہدری نے کہا کہ ملک میں پہلی بار بڑے لوگوں پر ہاتھ ڈالا گیا اور اب لاہور سے لاڑکانہ تک مافیا کی چیخیں سنائی دے رہی ہیں۔
وزہر اطلاعات نے کہا کہ 1947 سے لے کر 2008 تک پاکستان کا قرضہ 37 ارب ڈالر تھا جس سے اسلام آباد شہر بنا،منگلا ڈیم،تربیلا ڈیم اور موٹروے بنائے گئے لیکن 2008 سے 2013 تک 37 ارب ڈالر سے بڑھ کر دگنا ہوگیا اور 2013 سے 2018 تک اب یہ 97 ارب ڈالر ہوگیا.
فواد چوہدری نے کہا کہ اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ جب 10 سالوں میں پاکستان کا قرضہ 3 گنا کردیا گیا تو اس سے کیا کیا ۔
نیب نے قاسم قیوم اور فضل داد کا 15 روزہ جسمانی ریمانڈ حاصل کرلیا ہے،انہوں نے کہا کہ ان دونوں افراد کے ذریعے پیسے ٹرانسفر کیے گئے تھے۔
فواد چوہدری نے کہا کہ حمزہ شہباز پر الزام ہے کہ انہوں نے 85 سے ایک سو ارب روپے کے درمیان پیسہ منی لانڈرنگ کے ذریعے پاکستان سے باہر بھیجا اور اس پیسے سے شہباز شریف کے خاندان نے اپنے اثاثے خریدے۔

یہ بھی پڑھیں

سپریم کورٹ سے یہ صادق اور امین نہ ہونے کا سرٹیفکیٹ لے چکے ہیں

سپریم کورٹ سے یہ صادق اور امین نہ ہونے کا سرٹیفکیٹ لے چکے ہیں

اسلام آباد: وزیراعظم کے معاون خصوصی احتساب شہزاد اکبر اور اٹارنی جنرل انور منصور خان …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے