ایک دوسرے کیخلاف نہیں، آئیں بات چیت کریں

پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط نے کہا کہ کشمیر دونوں ملکوں کے درمیان بنیادی تنازع ہے، جس کا حل ایک دوسرے کے خلاف جاکر نہیں بلکہ سنجیدہ اور دیرپا سفارتکاری کے ذریعے ہی نکالا جاسکتا ہے، مسئلہ کشمیر کو کشمیریوں کی امنگوں کے مطابق حل کرنا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ بھارت نے سرحد پار فائرنگ کو سرجیکل اسٹرائیک کا نام دیا اور پہلی دفعہ خود سیز فائر سمجھوتے کی ورزی کا اعتراف کیا۔

پاکستانی ہائی کمشنر نے کہا صورتحال سے غلط نتائج اخذ کرنا اور جھوٹی توقعات سے بچنا نہایت اہم ہے کیونکہ یہ دونوں ملکوں کے مفاد میں نہیں۔

یہ بھی پڑھیں

دوبارہ اسلام آباد مارچ کا اعلان کر سکتے ہیں

دوبارہ اسلام آباد مارچ کا اعلان کر سکتے ہیں

ملاکنڈ: جعلی حکمرانوں کی حکومت کا خاتمہ ہو رہا ہے، سارے جیلوں میں چلے جائیں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے