سندھ بھر کے291 علمائے کرام پر تقریرپر پابندی عائد

کراچی: محکمہ داخلہ سندھ نے 2 ماہ کے لیے سندھ بھرمیں مختلف مکاتب فکر کے 291 علمائے کرام پر تقاریر پر پابندی عائد کردی ہے۔

 محکمہ داخلہ سندھ کی جانب سے 2 ماہ کے لیے سندھ بھرمیں مختلف مکاتب فکرکے 291 علما کرام پر تقاریر پر پابندی عائد کردی گئی ہے جس کا باقاعدہ نوٹی فکیشن بھی جاری کردیا گیا ہے۔

نوٹی فکیشن کے مطابق سندھ بھرکے 291 علما کرام کی ایک ضلع سے دوسرے ضلع جانے پر بھی پابندی لگائی گئی ہے، ایم ڈبلیوایم کے حسن ظفرنقوی ، شیعہ علما کاؤنسل کے صدرمولانا مرزا یوسف جب کہ جے یو آئی کے مولانا محمد اعظم جہانگیری بھی وزرات داخلہ سندھ کے حکم کے پابند ہوں گے۔ دیگر علما کرام میں مولانا باقر نجفی، سید خادم حسین شاہ، اقبال جعفری، سید اشتیاق علی شاہ اور مولانا عبدالغفورجعفری شامل ہیں۔ خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے انہیں  فوری گرفتار کیا جائے گا۔

 

یہ بھی پڑھیں

30 ستمبر کو سندھ کے 5 تعلیمی بورڈز میں چیئرمینز کے عہدے کی مدت پوری ہو رہی ہے

30 ستمبر کو سندھ کے 5 تعلیمی بورڈز میں چیئرمینز کے عہدے کی مدت پوری ہو رہی ہے

کراچی: چیف سیکریٹری سندھ ممتاز علی شاہ نے ایکسپریس سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے