شمالی کوریا : فوجی سربراہ کو ‘سزائے موت’

برطانوی خبر رساں ادارے نے جنوبی کوریا کی یون ہاپ نیوز ایجنسی کے حوالے سے بتایا ہے کہ شمالی کوریا کے فوجی سربراہ کو کرپشن اور ذاتی فوائد کے حصول کے الزامات کے تحت رواں ماہ موت کی سزا دی گئی.

دوسری جانب شمالی کوریا کے اندرونی معاملات سے باخبر ذرائع نے بھی نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر ‘رائٹرز’ کو جنرل ری یونگ کی سزائے موت کی تصدیق کی.

جنرل ری، کورین پیپلز آرمی (کے پی اے) کے چیف آف جنرل اسٹاف تھے، جنھیں شمالی کوریا کے موجودہ حکمران کم جونگ ان نے 2013 میں مقرر کیا تھا.

دوسری جانب جنوبی کوریا کی نیشنل انٹیلی جنس سروس نے اس حوالے سے کوئی بیان دینے سے معذرت کرلی، لہذا اس خبر کی آزاد ذرائع سے تصدیق نہیں کی جاسکی.

2011 میں کم جونگ ان کے اقتدار سنبھالنے کے بعد سے متعدد اہم حکومتی عہدیداران کو مختلف الزامات کے تحت سزائے موت دی جا چکی ہے۔

گذشتہ برس اپریل میں بھی شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ ان کے ساتھ غداری اور توہین آمیز رویے کا مظاہرہ کرنے پر وزیرِ دفاع ہیون یونگ چول کو سزائے موت دے دی گئی تھی.

وزیرِدفاع ہیون یانگ چول دفاعی تقریبات میں اکثر سوتے ہوئے دیکھے گئے تھے اور ان پر الزام تھا کہ انہوں نے کئی مرتبہ کم جونگ ان کے نظریات سے اتفاق نہیں کیا تھا، اوراپنے ردّعمل کا بھی اظہار کیا تھا

یہ بھی پڑھیں

منامہ کانفرنس کی ناکامی پر امریکا کی جانب سے اعتراف

منامہ کانفرنس کی ناکامی پر امریکا کی جانب سے اعتراف

مغربی ایشیا میں نام نہاد قیام امن کے بارے میں امریکی صدر کے خصوصی ایلچی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے