معذور افراد, کو 5 فیصد کی, کم ترین شرح سود, پر رعایتی, قرض دینے, کا فیصلہ

معذور افراد کو 5 فیصد کی کم ترین شرح سود پر رعایتی قرض دینے کا فیصلہ

کراچی: ایس بی پی کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ بینک نے معذور افراد کے لیے چھوٹے کاروبار کی مالی معاونت اور کریڈٹ کی ضمانت کی سہولت کی اجازت دے دی

گورنر اسٹیٹ بینک طارق باجوہ نے اس بات کا اعلان قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ، مالیات اور اقتصادی امور کے اجلاس میں کیا۔
اس موقع پر کمیٹی کے اراکین سمیت اسٹیٹ بینک کے اعلیٰ افسران بھی موجود تھے۔
چنانچہ اب اسٹیٹ بینک، ڈیولپمنٹ فنانس انسٹیٹیوشنز (ڈی ایف آئیز) اور بینکوں کو رقم دینے کے لیے نئی شرائط پر 100 فیصد سے زائد قرضہ فراہم کرے گا۔
جس سے معذور افراد زیادہ سے زیادہ 5 سال کی مدت کے لیے 15 لاکھ روپے تک قرض حاصل کریں گے جس میں 6 ماہ کا اضافی وقت بھی شامل ہوگا۔
گورنر اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا کہ ملک میں معذور افراد کی مجبوری کو سمجھتے ہوئے اور اقتصادی معاملات میں ان کی شمولیت نہ ہونے کی وجہ سے درپیش نقصانات کو مدِ نظر رکھتے ہوئے اسٹیٹ بینک نے ترجیحی ترقیاتی شعبے میں خصوصی افراد کے لیے اسکیم مختص کی ہے۔
انہوں نے بتایا اس سہولت سے معذور افراد کی چھوٹے کاروبار کے لیے 5 فیصد کی رعایتی شرح سود سالانہ پر مالی معاونت تک رسائی بہتر ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں

سو سے زائد واردتوں میں ملوث ملزمان کو گرفتار

کراچی: 101 وارداتوں میں ملوث گروہ کے 3 کارندے گرفتار، ملزمان ہر شہر میں 25 …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے