ایران مخالف ٹرمپ کے اقدامات کا مقابلہ کرنے پر آسٹریا کے صدر کی تاکید

ایران مخالف ٹرمپ کے اقدامات کا مقابلہ کرنے پر آسٹریا کے صدر کی تاکید

آسٹریا کے صدر یورپی یونین سے کہا ہے کہ وہ امریکا کی خوددسرانہ پالیسیوں خاص طور پر ایٹمی معاہدے کے تعلق سے واشنگٹن کے اقدامات کا مقابلہ کرے۔

آسٹریا کے صدر الیکزنڈر فن دربیلن نے جرمن اخبار دی وولٹ سے اپنے انٹرویو میں واشنگٹن کے رویّے کو متکبرانہ بتایا اور یورپی ملکوں سے کہا کہ وہ امریکی صدر ٹرمپ کے مقابلے میں زیادہ ٹھوس اور مضبوط موقف اپنائیں۔ آسٹریا کے صدر نے ایٹمی معاہدے سے امریکا کے نکل جانے کا ذکرکرتے ہوئے کہا کہ ٹرمپ کسی وجہ کے بغیر اس معاہدے سے باہر نکلے ہیں اور یورپی ملکوں کو دھمکی ہے کہ اگر ایران کے ساتھ تجارت کی تو انہیں سنگین پابندیوں کا سامنا کرنا پڑے گا۔

یاد رہے کہ گذشتہ مئی کے مہینے میں ایٹمی معاہدے سے امریکا کے نکلنے کے بعد آسٹریاکے چانسلر کے دفتر نے ایک بیان جاری کرکے اعلان کیا تھا کہ آسٹریا ایران کے ساتھ اقتصادی اور تجارتی تعلقات کو فروغ دینے کے ساتھ ساتھ ایٹمی معاہدے کے تعلق سے امریکی اقدامات اور  تہران کے خلاف واشنگٹن کی پابندیوں کا ڈٹ کر مقابلہ کرے گا۔

پرویزمشرف علیل ہیں جن کی عدم موجودگی میں بیان ریکارڈ نہیں کیا جاسکتا

یہ بھی پڑھیں

برطانوی تیل بردار جہاز کو عالمی قوانین کی خلاف کرنے کے الزام میں قبضے میں لے لیا

برطانوی تیل بردار جہاز کو عالمی قوانین کی خلاف کرنے کے الزام میں قبضے میں لے لیا

تہران: ایرانی رضاکار فورس بیسج (سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی) کے شعبہ تعلقات عامہ کی جانب …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے