پاسداران انقلاب, کی بس پر حملے میں, ہلاکتوں پر ,افسوس کا اظہار

پاسداران انقلاب کی بس پر حملے میں ہلاکتوں پر افسوس کا اظہار

اسلام آباد: وزیر خارجہ نے اپنے ایرانی ہم منصب جاوید ظریف سے ٹیلیفونک گفتگو کے دوران یہ پیشکش کی اور اب پاکستان کا وفد ایران کے تحفظات جاننے کے لیے جلد تہران کا دورہ کرے گا

بدھ ہونے والے حملے میں 27 اہلکاروں کی ہلاکت کے بعد یہ دونوں ملکوں کے درمیان پہلی مرتبہ اعلیٰ سطح کا رابطہ ہوا ہے۔
یہ حملہ اس وقت ہوا تھا جب فوجی دستے ایران کے شہر زاہدان اور خش کے درمیان سفر کر رہے تھے اور اس حملے کی ذمے داری دہشت گروپ جیش العدل نے قبول کی تھی۔
ایرانی ذرائع ابلاغ کے مطابق شاہ محمود قریشی نے حملے کی مذمت کرتے ہوئے دہشت گردوں کے خلاف پاکستان کے مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی جو دونوں ملکوں کے درمیان سرحدی علاقے میں ایرانی اہلکاروں کو نشانہ بنا رہے ہیں۔
اس علاقے میں ماضی میں بھی کئی واقعات رونما ہو چکے ہیں اور اکتوبر میں جیش العدل کی جانب سے اغوا کیے گئے ایرانی اہلکاروں کی بازیابی کے لیے پاکستان نے مدد کی تھی۔
پاکستان کی وزارت خارجہ نے اس گفتگو کے حوالے سے کوئی باضابطہ بیان جاری نہیں کیا۔
البتہ ایرانی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ شاہ محمود قریشی نے جنوبی مشرقی ایران میں کیے دہشت گرد حملے کی مذمت کرتے ہوئے ہلاکتوں پر افسوس کا اظہار کیا

یہ بھی پڑھیں

اسٹیٹ بینک نے پاکستان میں غذائی قلت کے مسئلے پر خصوصہ روشنی ڈالی

اسٹیٹ بینک نے پاکستان میں غذائی قلت کے مسئلے پر خصوصہ روشنی ڈالی

اسلام آباد: بلوچستان میں تقریباً 30 فیصد گھرانے فاقے پر مجبور ہیں جبکہ دوسری جانب …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے