سندھ حکومت نے سکھر اور لاڑکانہ میں آپریشن کا فیصلہ کر لیا

آپریشن سندھ پولیس کا معاملہ ہے تاہم رینجرز بھی ساتھ ہو گی ۔ جبری ریٹائرمنٹ اور برطرفیوں کیخلاف آئینی تحفظ دیا جائے گا ، سندھ میں دہشت گرد بلوچستان سے داخل ہوتے ہیں اس معاملے کو بلوچستان حکومت سے اٹھائیں گے۔’’حکومت پر جب بھی مشکل وقت آتا ہے تو” گلو بٹوں “ کو آگے لے آتے ہیں ، پی ٹی آئی سے تصادم کا فائدہ حکومت کو نہیں ہو گا ‘‘۔

وزیر اعلیٰ سندھ کی زیر صدارت امن وا مان کے حوالے سے جاری اجلاس کے بعدمیڈیا بریفنگ دیتے ہوئے انکا کہنا تھا کہ مدارس کا معاملہ خوش اسلوبی سے حل کرنا چاہتے ہیں ۔اجلا س میں آئی جی سندھ نے شکار پور واقعے اور سندھ میں امن و امان کے حوالے سے بریفنگ دی ہے اور دیگر اہم معامالات پر بات ہوئی ہے جبکہ اجلا س میں قانون سازی پر زیادہ غور کیا گیا تاہم سندھ بھر میں امن و امان بہتر ہو گیا ہے اور جرائم میں مسلسل کمی آرہی ہے ۔

یہ بھی پڑھیں

ساحلی علاقے صوبائی حکومت کے زیر انتظام لانے کا فیصلہ

ساحلی علاقے صوبائی حکومت کے زیر انتظام لانے کا فیصلہ

کراچی: قانونی مسودے کی سندھ اسمبلی سے منظوری کے بعد کراچی کے تمام ساحل سندھ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے