میرے, بھائی کو, دہشت گرد قراردیا گیا، ذیشان شریف, انسان تھا

میرے بھائی کو دہشت گرد قراردیا گیا، ذیشان شریف انسان تھا

لاہور: سانحہ ساہیوال کیس میں جوڈیشل کمیشن تشکیل نہ دینے کا اقدام مقتول ذیشان کے بھائی احتشام نے لاہورہائیکورٹ میں چیلنج کردیا۔ درخواست احتشام کی جانب سے سید فرہاد علی شاہ ایڈووکیٹ نے دائرکی

درخواست میں استدعا کی گئی کہ میرے بھائی کو دہشت گرد قراردیا گیا، ذیشان شریف انسان تھا، ہمیں کسی امداد کی ضرورت نہیں۔ درخواست میں استدعا کی گئی کہ سانحہ ساہیوال کی تحقیقات کے لیے جوڈیشل کمیشن تشکیل دیا جائے اورذیشان کے قاتلوں کے خلاف مقدمہ درج کرکے بے گناہ قرار دیا جائے۔
وزیراعظم عمران خان نے گزشتہ ہفتے لاہور کے دورے کے دوران اعلی سطحی اجلاس میں سانحہ ساہیوال پر جوڈیشل کمیشن بنانے کا عندیہ دیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں

نیب احتساب کا نہیں،پولیٹیکل انجینئرنگ کا ادارہ ہے

نیب احتساب کا نہیں،پولیٹیکل انجینئرنگ کا ادارہ ہے

لاہور: رانا ثناءاللہ نے کہا ہے کہ نیب احتساب کا نہیں،پولیٹیکل انجینئرنگ کا ادارہ ہے،چیئرمین …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے