ایران پر نظر رکھنے کے ٹرمپ کے بیان کی امریکی حکام کی جانب سے تردید

ایران پر نظر رکھنے کے ٹرمپ کے بیان کی امریکی حکام کی جانب سے تردید

مشرق وسطی میں امریکی فوج کے کمانڈر نے بھی امریکی وزارت خارجہ کے عہدیداروں کی طرح عراق سے ایران پر نظر رکھنے کی کوشش کے بارے میں صدر ٹرمپ کے بیان سے پسپائی اختیار کر لی ہے۔

امریکی فوج کی سینٹرل کمان کے سربراہ  جنرل جوز ف ووٹل نے صدر ٹرمپ کے اس بیان سے خود کو الگ کر لیا ہے کہ عراق میں امریکی فوجی اڈہ ایران اور اس کے اتحادیوں کی سرگرمیوں پر نظر رکھنے کے لئے باقی رہے گا-

امریکی صدر ٹرمپ نے سی بی ایس ٹیلی ویژن چینل کے پروگرام فیس دی نیشن میں کہا تھا کہ عراق میں امریکی فوجی اڈے کا ایک مشن ایران کی سرگرمیوں منجملہ اس کے جوہری پروگرام پر نظر رکھنا ہے-

ٹرمپ نے کہا تھا کہ ہم ایران پر پوری طرح نظر رکھنے کی پوزیشن میں رہنا چاہتے ہیں-

ان کا کہنا تھا کہ ہم نے عراق میں خطیر رقم خرچ کر کے ایک غیر معمولی فوجی اڈہ بنایا ہے، جو ایسی پوزیشن پر واقع ہے کہ جہاں سے مسائل سے دوچار مشرق وسطی کے سبھی خطوں پر نظر رکھی جا سکتی ہے-

امریکی صدر ٹرمپ نے کہا تھا کہ یہ وہ حقیقت ہے کہ جس کے بارے میں بہت سے لوگوں کو علم نہیں ہے اور ہم نظر رکھنے کے مشن کو جاری رکھنا چاہتے ہیں تاکہ یہ دیکھیں کہ مشرق وسطی میں مسائل ہیں یا نہیں؟ ہم یہ بھی دیکھنا چاہتے ہیں کہ کوئی ایٹمی ہتھیار بنا رہا ہے یا کچھ اور تیار کر رہا ہے؟ اور ان کو خبر ہونے سے پہلے ہی ہم ان کے بارے میں باخبر ہو جائیں گے-

امریکی صدر کے اس بیان کے فورا بعد عراقی صدر برہم صالح نے ٹرمپ کے بیان کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ امریکی صدر نے عراق سے ایران پر نظر رکھنے کے لئے عراقی حکام سے اجازت نہیں لی ہے-

خود امریکا کے اندر بھی سی این این نے پینٹاگون کے حکام اور دفاعی تجزیہ نگاروں کے حوالے سے ٹرمپ کے بیان کی تردید کی ہے اور کہا ہے کہ اس میں کوئی سچائی نہیں ہے-

سی این این نے خبر دی ہے کہ عراق میں امریکی فوجیوں کے مشن کے بارے میں ٹرمپ کے بیان نے پینٹاگون کے عہدیداروں کو حیرت میں ڈال دیا ہے-

مشرق وسطی میں امریکی فوج کے کمانڈر جوزف ووٹل نے منگل کو امریکی کانگریس میں بیان دیتے ہوئے بڑی صراحت کے ساتھ ٹرمپ کے بیان پر سوالیہ نشان لگایا اور کہا کہ عراق میں امریکی فوج کی ذمہ داریوں اور مشن میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے اور امریکی فوج جس مشن پر کام کر رہی ہے وہ عراقی حکام کے علم میں ہے-

مشرق وسطی میں امریکی فوج کے کمانڈر ووٹل نے دعوی کیا کہ امریکی فوج عراق میں داعش کا مقابلہ کرنے کے لئے عراقی فوج  کے ساتھ تعاون کر رہی ہے-

انہوں نے ایک سینیٹر کے اس سوال کے جواب میں کہ کیا اب امریکی فوج ایران کی سرگرمیوں پر بھی نظر رکھ رہی ہے؟ کہا کہ ہم نے ابھی تک یہ کام انجام نہیں دیا ہے-

ریکارڈ فیس دے کر مارخور کا شکار

یہ بھی پڑھیں

مختلف شہروں میں گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان

مختلف شہروں میں گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان

ریاض: سعودی محکمہ موسمیات نے امکان ظاہر کیا ہے کہ ریاض، مدینہ منورہ، بریدہ، نجران، …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے