تیزرفتاری نے باپ بیٹی سمیت تین افراد کی جان لے لی

صادق اباد کی مصروف شاہراہ پر دو موٹر سائیکل سوار ریس لگا رہے تھے کہ ان میں سے ایک سامنے سے آنے والی موٹر سائیکل سے ٹکرا گیا جس کے نتیجے میں ہولناک حادثہ پیش آیا۔

عینی شاہدین کے مطابق سامنے سے آنے والی موٹر سائیکل پر باپ اور دس سالہ بیٹی سوار تھے جو موقع پر ہی جاں بحق ہو گئےجب کہ ریس لگانے والا تیز رفتار موٹر سائیکل سوار بھی اس حادثے میں اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھا۔

ریسکیو ادارے نے تینوں افراد کی میتوں کو جناح اسپتال صادق آباد منتقل کر دیا ہے جہاں ضابطے کی کارروائی کے بعد لواحقین میتوں کو وصول کرسکیں گے۔

عالمی ادارہ صحت کی جانب سے جاری کردہ ایک سروے کے مطابق ہر سال پاکستان میں 30 ہزار کے لگ بھگ افراد ٹریفک حادثات میں موت کا شکار ہوجاتے ہیں جو کہ ملک میں ہونے والی مجموعی سالانہ اموات کا2.69 فیصد بنتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق حادثات کا شکار ہوکر جاں بحق ہونے والے افراد کی عمریں عموماً 18 سے 28 سال کے درمیان ہوتی ہیں اور حادثات کا سبب اکثر و بیشتر تیز رفتاری ثابت ہوتا ہے۔

حکومت کی جانب سے ملک بھر کی تمام شاہراہوں پر رفتار کی حد مقرر کی گئی ہے تاہم ٹریفک قوانین سے آگاہی اور اس معاملے میں سختی نہ ہونے کے سبب اس قسم کے واقعات پیش آنا معمول کی بات ہے۔

یہ بھی پڑھیں

فضل الرحمان کرپشن کا دفاع کرنے جا رہے ہیں

فضل الرحمان کرپشن کا دفاع کرنے جا رہے ہیں

اسلام آباد: فیصل آباد سے پاکستان تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی فرح حبیب نے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے