آئس نشے کی روک تھام, کے, لیے, قانون سازی کرنے, کا فیصلہ

آئس نشے کی روک تھام کے لیے قانون سازی کرنے کا فیصلہ

پشاور: مجوزہ قانون کے تحت آئس بنانے والے کو پچاس لاکھ روپے جرمانہ اور سزائے موت جبکہ یہ نشہ فروخت کرنے والے کو پانچ لاکھ روپے جرمانہ اور پانچ سال قید کی سزا تجویز کی گئی ہے

مجوزہ قانون میں نشہ کرنے والے افراد کو بھی پچاس ہزار روپے جرمانہ اور ایک سال قید کی سزا تجویز کی گئی ہے۔ اس سلسلے میں محکمہ قانون نے قانون سازی کے لیے ڈرافت تیار کرلیا ہے۔
قانون سازی کے لیے محکمہ ایکسائز، سوشل ویلفیئر، اینٹی نارکوٹکس، ضلعی حکومت اور دیگر اداروں سے بھی مشاورت کی گئی ہے جس کے بعد مسودہ تیار کرکے منظوری کے لیے وزیراعلی کو بھجوا دیا گیا ہے۔
محمود جان نے کہا کہ مسودے کو جسے کابینہ میں پیش کیا جائے گا جس کے بعد اسمبلی سے منظوری لی جائے گی، اس خطرناک نشہ کے خاتمے کے لیے قانون میں سخت سزائیں تجویز کی گئی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

واقعے, کے تین سال, کے بعد صوبائی, پولیس نے تسلیم کیا کہ, ان لڑکیوں, کو قتل, کیا گیا ہے

واقعے کے تین سال کے بعد صوبائی پولیس نے تسلیم کیا کہ ان لڑکیوں کو قتل کیا گیا ہے

خیبر پختونخوا: سابق چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے لڑکیوں کے ڈانس کی ویڈیو منظر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے