مومنہ مستحسن میرے گھر میں کام کرنے والی نوکرانی سے ملتی ہیں

 کوک اسٹوڈیو میں اپنے گانے ’آفرین آفرین‘ سے مقبولیت حاصل کرنے والی گلوکارہ مومنہ مستحسن کے دلکش انداز کے سوشل میڈیا پر خوب چرچے ہیں تاہم بہت سے ایسے بھی لوگ ہیں جنھیں ان کی لُکس کچھ خاص پسند نہیں آئیں۔

حال ہی میں سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک پر ایک صارف نے مومنہ کو اپنے گھر کی ’نوکرانی‘ سے تشبیہ دے ڈالی۔

ہشام بیگ نامی مذکورہ صارف نے اپنے ایک کمنٹ میں کہا تھا کہ ’مومنہ خوبصورتی کے بالکل بھی قریب نہیں، وہ ایک عام سی شکل و صورت کی حامل لڑکی ہیں، بُرا مت مانیے گا لیکن وہ میرے گھر میں کام کرنے والی نوکرانی سے ملتی ہیں‘۔

اس کمنٹ کے جواب میں مومنہ نے RespectAll (سب کی عزت کریں) کے ہیش ٹیگ کا سہارا لیتے ہوئے کہا، ’میں نے تو کبھی بھی اس بات کا دعویٰ نہیں کیا کہ میں خوبصورت ہوں، آپ کی نوکرانی سے مشابہت رکھنے میں برا ماننے والی کوئی بات نہیں ہے، میں خوش ہوں کہ میں ایسے محنتی لوگوں سے ملتی ہوں جو کسی کے گھر کا کام کرتے ہیں‘۔

تاہم مومنہ نے اس پر ہی اس بات کا اختتام نہیں کیا، انہوں نے ٹوئٹر پر اس حوالے سے مزید کہا کہ ’مجھے نہیں معلوم تھا کہ پاکستان کے گھروں میں کام کرنے والی ’نوکرانی‘ خوبصورت نہیں ہوسکتی اور کسی کو نوکرانی کہنا برا ماننے والی بات ہے‘

یہ بھی پڑھیں

عظیم شاعر ساغر صدیقی کو اہل ذوق آج چالیس سال بعد بھی یاد کررہے ہیں

عظیم شاعر ساغر صدیقی کو اہل ذوق آج چالیس سال بعد بھی یاد کررہے ہیں

ان کا اصل نام محمد اختر تھا اورآپ چودہ برس کی عمر میں ہی شعر …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے