نو سالہ بچے نے ننھے بھائی کی زندگی بچا لی

جرمنی میں ایک نو سالہ بچہ گھر کے سوئمنگ پول میں ڈوبنے والے اپنے دو سالہ بھائی کی سانسیں بحال کرکے ہیرو بن گیا ہے

جب ان کی نانی بچے کی نیپی لینے گھر کے اندر گئیں تو دو سالہ روڈولف گھر کے باغیچے میں چلا گیا اور وہاں موجود سوئمنگ پول میں منہ کے بل گر گیا۔

بچے کو اس کی ماں اور نانی نے پانی سے نکالا تو وہ سانس نہیں لے رہا تھا۔

اس وقت چھ سالہ مارکس نے طبی کارکنوں کو فون کیا کیونکہ اس کی نانی کو جرمن زبان پر مہارت نہیں ہے اور وہ روسی زبان جانتی ہیں۔

اس بچے کو فون پر بتایا گیا کہ وہ کس طرح اپنے چھوٹے بھائی کو ابتدائی طبی امداد فراہم کرے۔ اسے بتایا گیا کہ وہ اس کا سینہ ملے اور اس کے منہ سے اسے سانس دینے کی کوشش کرے۔ اس نے ایسا ہی کیا۔

طبی کارکنوں کے پہنچنے سے پہلے ہی چھوٹے بچے کی سانسیں بحال ہو گئیں جسے بعد میں ہیلی کاپٹر کے ذریعے ماربرگ کے لے جایا گیا۔

ان کی مدد کرنے والے طبی اہلکار کا کہنا تھا کہ مارکس نے پریشانی کی باوجود ان کی ہدایات پر ہو بہو عمل کیا۔

 

یہ بھی پڑھیں

پرانے کپڑے

میم آپ اپنے پرانے کپڑے کس کو دیتی ہیں میں تحریر: زینب بخاری میری کلاس …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے