پی آئی اے, کے پاس مختلف اقسام ,کے 64 طیارے, ہوا کرتے تھے

پی آئی اے کے پاس مختلف اقسام کے 64 طیارے ہوا کرتے تھے

راولپنڈی: پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائنز (پی آئی اے) کے پاس 32 طیارے کام کر رہے ہیں جن میں سے 6 ابھی زیر مرمت ہیں

32 طیاروں میں 12 بوئنگ 777، 11 اے 320 اور 9 اے ٹی آر طیارے 30 مقامات پر پرواز بھر رہے ہیں جبکہ زیر مرمت طیاروں میں ایک بوئنگ 777، 2 اے 320 اور 3 اے ٹی آر شامل ہیں۔
پی آئی اے کے پاس مختلف اقسام کے 64 طیارے ہوا کرتے تھے جن میں ایئر بس اے 310، اے 300 اور اے 330، بوئنگ 737 اور 747 اور ڈوگلاس ڈی سی 9 اور ڈی سی 10 شامل ہیں۔
یہ تعداد اب کم ہوکر صرف 32 رہ گئی ہے۔
پی آئی کے ترجمان مشہود تاجور نے بتایا کہ 32 طیاروں میں سے 26 پرواز بھر رہے ہیں جبکہ 6 زیر مرمت ہیں۔
ان کا کہنا تھا کہ پی آئی اے کو بڑھتے ہوئے مسافروں کے پیش نظر اپنے طیاروں میں اضافے کی ضرورت ہے۔
طیاروں کی کمی اور ایک نجی ایئرلائن کی بندش کی وجہ سے کرایوں میں بھی اضافہ دیکھا گیا ہے جس کی وجہ سے مسافروں کو بھی پریشانی کا سامنا ہے۔
ترجمان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں کام کرنے والے کسی بھی ایئرلائنز نے مسافروں کی بڑھتی ہوئی تعداد پر اپنے طیاروں میں اضافہ نہیں کیا ہے۔
ایئرلائن سے منسلک ایک انجینیئر کا کہنا تھا کہ ’گزشتہ دور حکومت میں طیاروں کی مرمت کو نظر انداز کیا گیا تھا تاہم حالیہ حکومت طیاروں کے اسپیئر پارٹس پر توجہ دے رہی ہے جو نقصانات کو کم کرنے اور زیادہ طیاروں کو کام کرنے میں مدد فراہم کرے گی‘۔
ان کا کہنا تھا کہ لا’ئٹ بلب سمیت دیگر پارٹس دستیاب نہ ہونے سے کیبن کرو سمیت مسافروں کو بھی پریشانی کا سامنا تھا‘۔
انہوں نے بتایا کہ ’ہمیں ماضی میں لائٹ بلب بھی نہیں دیے جاتے تھے تاہم اب صورتحال بہتر ہورہی ہے‘۔

یہ بھی پڑھیں

صدر مملکت نے چاروں گورنر اورعلماء کی ویڈیو کانفر نس آج

صدر مملکت نے چاروں گورنر اورعلماء کی ویڈیو کانفر نس آج

اسلام آباد: حکومت نے مساجد کیلئے ایس اوپیز کا از سرنو جائزہ لینے کا فیصلہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے