پنجاب میں بچوں کے اغوا کا ڈرامہ سوشل میڈیا پر سرگرم ایک گروپ نے پھیلایا، رانا ثنااللہ

لاہور: صوبائی وزیر قانون رانا ثنااللہ کا کہنا ہے کہ سوشل میڈیا پر سرگرم ایک گروپ پنجاب میں بچوں کے اغوا کے حوالے سے غلط شواہد اور امن و امان کی منفی  تصویر پیش کرکے معاشرے میں افراتفری پھیلا رہا ہے۔

پنجاب اسمبلی میں امن و امان اور بچوں کے اغوا سے متعلق بحث پر اظہار خیال کرتے ہوئے صوبائی وزیر قانون رانا ثنااللہ  کا کہنا تھا کہ پنجاب میں بچوں کے اغوا کا ڈرامہ سوشل میڈیا پر سرگرم ایک گروپ نے پھیلایا اور اس حوالے سے غلط شواہد اور منفی تصویر پیش کرکے معاشرے میں افراتفری پھیلانے کی کوشش کی گئی۔ حکومت نے اس گروپ کے خلاف نوٹس لے لیا ہے اور آئندہ اس طرح کی سازش نہ کرنے کی تنبیہ بھی کردی گئی ہے۔

رانا ثنااللہ کا کہنا تھا کہ پنجاب میں نیشنل ایکشن پلان کے تحت مدارس کے اساتذہ اور بچوں کی مکمل دستاویزات جمع کی جاچکی ہیں ان اساتذہ میں1500 اساتذہ فورتھ شیڈول میں تھے۔ مساجد کی جیوٹیکنگ بھی مکمل کرلی گئی ہے۔ صوبائی وزیر قانون نے بتایا کہ 2014 سے لے کر اب تک 61 ہزار کومبنگ آپریشن ہوچکے ہیں جن میں 143 سر کی قیمت والے دہشت گرد مارے جا چکے ہیں اور 9 ہزار 698 سے زائد مقدمات درج ہوئے ہیں۔ ان آپریشنز کے دوران کئی جوان شہادت کے منصب پر بھی فائز ہوئے۔

ملک میں امن و امان کی صورتحال پر بات کرتے ہوئے صوبائی وزیر قانون کا کہنا تھا کہ بھارت اور افغانستان میں پاکستان کے خلاف سازشیں ہورہی ہیں اور وہ مقامی دہشت گردوں کے ساتھ مل کر ملک میں افراتفری پھیلانا چاہتے ہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ دہشت گردوں کا مقصد  پاکستان کو غیر مستحکم کرنا اور سی پیک سمیت دیگر ترقیاتی منصوبوں کو ناکام بنانا ہے لیکن پاک فوج کے ہراول دستے پاکستانی عوام کے ساتھ مل کر ان تمام سازشوں کو ناکام بنا دیں گے۔

یہ بھی پڑھیں

کٹھ پتلیوں کو سیاست سے فارغ کرنا ہے

کٹھ پتلیوں کو سیاست سے فارغ کرنا ہے

رحیم یار خان:  ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے