ڈنمارک کی شہریت کے لیے مصافحہ لازمی قرار

ڈنمارک کی شہریت کے لیے مصافحہ لازمی قرار

کوپن ہیگن: ڈنمارک نے شہریت حاصل کرنے والے شخص کے لیے حلف برداری کے بعد مصافحہ لازمی قرار دے دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق ڈنمارک نے شہریت حاصل کرنے والے ہرشخص بشمول مسلمان مرد وخواتین کے لیے بلاتقریق ہاتھ ملانے کو قانونی طور پر لازمی قرار دے دیا۔

ڈنمارک کی پارلیمان نے 23 کے مقابلے میں 55 ووٹوں سے ہاتھ ملانے کو قانی شکل دے دی، اس قانون کے مطابق شہریت کا خواہشمند حلف برداری کے بعد مذہبی عقائد سے بالاتر ہوکر حکام سے ہاتھ ملائے گا۔

اسلام مخالف سمجھے جانے والے قانون ساز مارٹن ہینریکسن کے مطابق اگر آپ ڈنمارک پہنچتے ہیں، یہاں خوش آمدید کہنے والے سے ہاتھ ملانا روایت ہے، اگر آپ ایسا نہیں کرتے تو یہ یقیناً توہین آمیز ہے۔

دوسری جانب دائین بازو کی جماعت ڈیشن پیپلزپارٹی کے ترجمان نے کہا کہ اگر ایک شخص ایسا نہیں کرسکتا تو اس کو ڈنمارک کی شہریت رکھنے کا کوئی حق نہیں رہتا۔

یاد رہے کہ رواں سال اگست میں ڈنمارک میں خواتین کے نقاب کرنے لگائی گئی متنازع پابندی کا باضابطہ طور اطلاق ہوگیا تھا۔

ترکی کا ایران سے باہمی تجارت میں 19 ارب ڈالر کے اضافے کا اعلان

یہ بھی پڑھیں

کرونا وائرس ٹیسٹ کے لیے گئے وقت پر دو بار نہ جانے پر تیسری بار بکنگ دو ہفتے تک نہیں ملے گی

کرونا وائرس ٹیسٹ کے لیے گئے وقت پر دو بار نہ جانے پر تیسری بار بکنگ دو ہفتے تک نہیں ملے گی

ریاض: سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی وزارت صحت کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے