امریکہ نے شام میں ناکامی تسلیم کرلی

امریکہ نے شام میں ناکامی تسلیم کرلی

شام کے امور میں امریکہ کے نمائندے نے شام کی قانونی حکومت کا تختہ الٹنے میں دہشت گردوں کی ناکامی کے سات برس بعد اعلان کیا ہے کہ امریکہ اب شام میں اس ملک کے صدر بشار اسد کی حکومت گرانے کا خواہاں نہیں ہے۔

جیفری جیمز نے اٹلانٹک تھنک ٹینک میں امریکہ کی پالیسی میں اس تبدیلی کا اعلان کرتے ہوئے یہ بھی کہا کہ شام میں بشار اسد کی حکومت جب تک بنیادی تبدیلی نہیں لائے گی امریکہ اور اس کے اتحادی ممالک تعمیرنو کے عمل میں شام کی مالی مدد و حمایت نہیں کریں گے۔
امریکی نمائندے نے ایک بار پھر ایران کے خلاف بے بنیاد دعوی کرتے ہوئے شام سے ایرانی فوجی مشیروں کے انخلا کی ضرورت پر زور دیا۔
یہ ایسی حالت میں ہے کہ ایران نے بارہا اعلان کیا ہے کہ شام میں اس کے فوجی مشیروں کی موجودگی اس ملک کی حکومت کی باضابطہ درخواست کی بنیاد پر ہے جبکہ دہشت گردوں کی حمایت کر کے شام میں امریکہ و اسرائیل کو اب تک کچھ حاصل نہیں ہو سکا ہے اور اسی بنا پر انھیں ایران کے فوجی مشیروں کی شام میں موجودگی ناگوار لگ رہی ہے۔
واضح رہے کہ علاقے میں صیہونی حکومت کے مفاد میں صورت حال تبدیل کرنے کے لئے شام میں دہشت گردوں کے ذریعے حکومت تبدیل کرانے کی امریکہ اور اس کے اتحادیوں کی کوشش شکست سے دوچار ہو گئی ہے۔

روس امریکہ کے مقابلے میں اپنے دفاع کے لیے تیار ہے، ولادیمیر پوتن

یہ بھی پڑھیں

کرونا وائرس ٹیسٹ کے لیے گئے وقت پر دو بار نہ جانے پر تیسری بار بکنگ دو ہفتے تک نہیں ملے گی

کرونا وائرس ٹیسٹ کے لیے گئے وقت پر دو بار نہ جانے پر تیسری بار بکنگ دو ہفتے تک نہیں ملے گی

ریاض: سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی وزارت صحت کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے