تیل کی درآمد کا بل 18 فیصد اضافے, کے بعد بڑھ کر, 6 ارب 54 کروڑ, ڈالر ہوگیا

تیل کی درآمد کا بل 18 فیصد اضافے کے بعد بڑھ کر 6 ارب 54 کروڑ ڈالر ہوگیا

اسلام آباد: اس کے برعکس ذراعت اور ٹیکسٹائل کے شعبے کو چھوڑ کر دیگر تمام شعبوں اور مشینی آلات کی درآمدات میں اس عرصے میں کمی دیکھنے میں آئی

جولائی سے نومبر تک کے اعداد و شمار کے مطابق تجارتی خسارہ، جو خطرے کے نشان کو چھو رہا تھا، اب کم ہونا شروع ہوگیا۔
نتیجتاً درآمدی بل میں 5 ماہ کے دوران 2.77 فیصد سال بہ سال کے اعتبار سے کمی آئی اور 4 ارب 60 کروڑ ڈالر ہوگیا جبکہ تجارتی خسارہ اسی عرصے کے دوران 2.03 فیصد سال بہ سال کے اعتبار سے کم ہو کر 14 ارب 50 کروڑ ڈالر ہوگیا۔
مصنوعات کے اعداد و شمار کے مطابق پیٹرولیم کے شعبے میں درآمدات میں دگنا اضافہ دیکھنے میں آیا جو جولائی تا نومبر کے عرصے میں 17.6 فیصد کی شرح سے بڑھ کر 6 ارب 54 کروڑ ڈالر تک پہنچ گیا جبکہ گزشتہ برس اسی عرصے کے دوران یہ رقم 5 ارب 55 کروڑ ڈالر تھی اور خام تیل کی درآمدات میں 41.3 فیصد کا اضافہ دیکھنے میں آیا۔
علاوہ ازیں پیٹرولیم مصنوعات کی درآمدات بھی گزشتہ 5 ماہ کے دوران 10.4 فیصد ہوگئی جبکہ کل درآمدی مقدار میں 36.6 فیصد کی کمی ریکارڈ کی گئی جس سے کل 4.7 میٹرک ٹن کی کمی واقع ہوئی۔
لیکویفائیڈ نیچرل گیس (ایل این جی) کےدرآمدی بل میں 107.8 فیصد کا اضافہ ہوا جبکہ لیکویفائیڈ پیٹرولیم گیس ۰ایل پی جی کے بل میں 33 فیصد اضاگہ دیکھنے میں آیا۔
اعداد و شمار کے مطابق مشینری سے متعلق درآمدات کے رجحان میں تبدیلی دیکھنے میں آئی ا اور اس میں معمولی کمی ہوئی ہے جبکہ ایل این جی سمیت تیل کا برآمداتی بل ،عالمی سطح پر تیل کی قیمتوں میں اضافے کے سبب بڑھ گیا۔
گزشتہ کئی سالوں سے مشینوں کا درآمداتی بل تجارتی خسارے میں اہم وجہ بن رہا تھا لیکن کچھ ماہ سے اس درآمدات میں کمی دیکھی گئی ہے۔
اس کے ساتھ خوراک کی درآمدات، جو کل درٓامدات میں دوسرا بڑا عنصر ہے ، سکڑ کر اس عرصے کے دوران 9.3 فیصد ہوگئی ہے۔
دوسری جانب مجموعی طور پر برٓامدات میں معمولی اضافہ دیکھنے میں آیا جو سال بہ سال کی شرح کے مطابق گزشتہ 5 ماہ کے عرصے میں بڑھ کر 9 ارب 20 ڈالر ہوگئی ۔

یہ بھی پڑھیں

کراچی : سمندر میں تیل و گیس کی تلاش

کراچی : سمندر میں تیل و گیس کی تلاش

کراچی :  گہرے سمندر میں تیل و گیس کی تلاش کی تیاریاں شروع ہوگئیں۔ کراچی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے