موجودہ عہد کے ظلم میری یہودی اقدار سے مطابقت نہیں رکھتے

موجودہ عہد کے ظلم میری یہودی اقدار سے مطابقت نہیں رکھتے

ہولی وڈ : اسرائیلی نژاد یہودی اداکارہ نےاسرائیل کے صہیونی ریاست کے قانون کونسل پرستانہ قرار دیا ہے۔

ایکانٹرویو میںاداکارہ نے کہاکہ صہیونی ریاست کا قانون نسل پرستانہ ہے اور یہ ایک غلطی ہے جس سے میں اتفاق نہیں کرتی کہ لوگوں کی زندگیاں ذاتی سطح پر سیاستدانوں کے فیصلے سے متاثر ہوں۔

انہوں نے مزید کہا میں صرف امید کرسکتی ہوں کہ ہم اپنے ہمسائیوں سے حقیقی معنوں میں محبت کرسکیں گے اور اکھٹے مل کر کام کرسکیں گے۔

انسٹاگرام پوسٹ میں انہوں نے لکھا کہ متعدد اسرائیلیوں اور دنیا بھر میں موجود یہودیوں کی طرح میں پوری قوم کا بائیکاٹ کیے بغیر اسرائیلی قیادت پر تنقید کرسکتی ہوں۔ان کے بقول میں اپنے اسرائیلی دوستوں، خاندان، غذائوں، کتابوں، فنون لطیفہ اور رقص کو پسند کرتی ہوں مگر موجودہ عہد کے ظلم میری یہودی اقدار سے مطابقت نہیں رکھتے۔

رواں سال جولائی میں اسرائیلی پارلیمان نے اسرائیل کو خصوصی طور پر صہیونی ریاست کا درجہ دینے کا قانون منظور کیا تھا۔اس قانون میں عبرانی زبان کو سرکاری زبان قرار دیا گیا جبکہ یہودی بستیوں کی آبادکاری کو قومی مفاد کا حصہ بنایا گیا۔اس قانون میں پورے بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت بھی قرار دیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں

ریڈ ہاٹ چلی پائپرز‘ نامی بینڈ میں شہنائی سے ملتا جلتا ایک ساز بجاتے ہیں

ریڈ ہاٹ چلی پائپرز‘ نامی بینڈ میں شہنائی سے ملتا جلتا ایک ساز بجاتے ہیں

سکاٹ لینڈ: وہ کہتے ہیں کہ جب بھی وہ کلٹ پہنتے ہیں تو خواتین انھیں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے