امریکی غلام ڈکٹیٹر صدام کی قیمت25 ملین ڈالر

امریکی غلام ڈکٹیٹر صدام کی قیمت25 ملین ڈالر

 

عراق کے سابق ڈکٹیٹر صدام کو ان کے نجی محافظ نے صرف ڈھائی کروڑ ڈالرز میں فروخت کیا تھا، محمد ابراہیم نامی محافظ نے امریکی افواج کو ان کی پناہ گاہ کا پتہ دیا تھا۔

عربی جریدے ’الیوم السابع‘ نے ’ صدام حسین کو 25 ملین ڈالرز میں بیچ دیا‘ کے عنوان سے ایک تفصیلی رپورٹ شائع کی جس میں انکشاف کیا گیا ہے کہ محمد ابراہیم نے اس زرعی فارم کا پتہ امریکی افواج کو بتایا تھا جہاں عراق کے سابق ڈکٹیٹر صدام نے پناہ لی ہوئی تھی۔

جریدے کی رپورٹ کے مطابق امریکی فوج کے ترجمان سمیر کا کہنا تھا کہ شب ایک بجے امریکی فوجی ہمارے پاس محمد ابراہیم کو لائے جس نے ہمیں صدام حسین کی پناہ گاہ کا نقشہ بنا کردیا۔

عربی جریدے کے مطابق محمد ابراہیم امریکی فوجیوں کو اپنے ہمراہ زرعی فارم لے گیا جہاں انہوں نے ایک چٹائی پر زور سے اپنا پیر مارا اور پھر کہا کہ صدام یہیں چھپا ہوا ہے۔

امریکی فوجیوں نے جب پڑی ہوئی چٹائی کو ہٹایا تو وہاں ایک گڑھا بنا ہوا ملا جس میں عراق کے سابق ڈکٹیٹر صدام چھپے ہوئے تھے۔

30 دسمبر 2006 میں عراق کے سابق ڈکٹیٹر صدام کو پھانسی کی سزا دی گئی تھی۔ سابق عراقی صدر کو پھانسی دیے جانے کا منظر پوری دنیا میں ٹی وی پر دکھایا گیا تھا۔

میزائل پروگرام پر مذاکرات نہیں کریں گے، ایرانی وزیر خارجہ

یہ بھی پڑھیں

کرونا وائرس ٹیسٹ کے لیے گئے وقت پر دو بار نہ جانے پر تیسری بار بکنگ دو ہفتے تک نہیں ملے گی

کرونا وائرس ٹیسٹ کے لیے گئے وقت پر دو بار نہ جانے پر تیسری بار بکنگ دو ہفتے تک نہیں ملے گی

ریاض: سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی وزارت صحت کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے