ڈالر کی بڑھتی قیمت سے ادویات کی قیمتوں میں اضافے کا خدشہ

ڈالر کی بڑھتی قیمت سے ادویات کی قیمتوں میں اضافے کا خدشہ

کراچی: پاکستان فارما سیوٹیکل مینوفیکچرنگ ایسو سی ایشن کے صدر نے کہا اب ادویات  کی قیمتیں بڑھانے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں رہا۔

پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے زاہد سعید نے کہا حکومت نے ادویات کی قیمتوں پر نظرِ ثانی نہیں کی تو 40 فی صد تک ممکنہ اضافہ ناگزیر ہو جائے گا۔ انھوں نے کہا کہ ادویات کی قیمتوں میں ممکنہ اضافہ 40 فی صد تک ہو سکتا ہے، اب قیمتیں بڑھانے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں رہا۔

جنوری سے اب تک ڈالر کی قیمت 104 روپے سے 140 روپے ہو چکی ہے اور ماہرین کے مطابق دسمبر تک ڈالر 160 روپے کا ہو جائے گا جب کہ ادویات کا 90 فی صد مٹیریل درآمد کیا جاتا ہے جس سے لاگت میں براہ راست اضافہ ہوا ہے۔

بجلی،گیس،ڈیزل کی قیمت میں اضافہ ہوا ہے جس سے لاگت پر بھاری اثر پڑا، ادویات کی صنعت اس بحران کا مقابلہ نہیں کر سکتی اس لیے قیمتوں پر نظرِ ثانی کی جائے ورنہ ملک میں ادویات کی شدید قلت پید ا ہو جائے گی جس کی ذمہ دار حکومت اور وزارتِ صحت ہوگی۔

 

یہ بھی پڑھیں

ورالئر نامی یہ دوا سنہ 2015 میں بالغ افراد میں شیزو فرینیا کے علاج کے لیے منظور کی گئی

ورالئر نامی یہ دوا سنہ 2015 میں بالغ افراد میں شیزو فرینیا کے علاج کے لیے منظور کی گئی

امریکا : اب ان کی ریسرچ کے کامیاب نتائج کو دیکھتے ہوئے ایف ڈی اے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے