فرانسیسی مشتعل مظاہرین کی صدارتی محل کی جانب بڑھنے کی کوشش

پیرس : مظاہرین کی صدارتی محل کی طرف پیش قدمی، پولیس کی شیلنگ اور لاٹھی چارج سے درجنوں افراد زخمی۔

حکومت کے خلاف احتجاج کرنے والے مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپیں بھی دیکھنے میں آئیں، جس کے بعد پولیس نے 272 افراد کو املاک کو نقصان پہنچانے کے الزام میں گرفتار کرلیا۔

پیرس سمیت ملک بھر میں ہونے والے پُر تشدد مظاہروں میں مزیداضافہ ہونے لگا، ہفتے کے روز 5 ہزار سے زائد افراد نے دارالحکومت کے سٹی سینٹر پر جمع ہوکر حکومت مخالف مظاہرہ کیا۔

میڈیا کا کہنا ہے کہ حکام کی جانب سے پیرس میں 8 ہزار پولیس اہلکار جبکہ 12 مسلح گاڑیاں بکتر بند تعینات کی گئی ہیں جبکہ ملک بھر میں تقریباً 90 ہزار پولیس افسران کونا خوشگوار واقعات سے نمٹنے کےلیے تعینات کیا گیا ہے۔

فرانس میں شروع ہونے والی یلو ویسٹ زرد جیکٹ تحریک پیٹرول کے نرخوں میں اضافے کے خلاف شروع ہوئی تھی لیکن فرانسیسی وزراء کا کہنا ہے کہ مذکورہ تحریک کومتشدد اور مشتعل مظاہرین نے ہائی جیک کرلیا ہے۔

مقامی میڈیا کا کہنا ہے کہ حالیہ دنوں فرانسیسی دارالحکومت میں ہونے والے پُرتشدد مظاہروں کو فرانسیسی تاریخ میں بدترین فسادات شمار کیا جارہا ہے۔

 

یہ بھی پڑھیں

برطانوی تیل بردار جہاز کو عالمی قوانین کی خلاف کرنے کے الزام میں قبضے میں لے لیا

برطانوی تیل بردار جہاز کو عالمی قوانین کی خلاف کرنے کے الزام میں قبضے میں لے لیا

تہران: ایرانی رضاکار فورس بیسج (سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی) کے شعبہ تعلقات عامہ کی جانب …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے