شاہد مسعود, کو, جج انعام اللہ کے, روبرو پیش

شاہد مسعود کو جج انعام اللہ کے روبرو پیش

اسلام آباد: ایف آئی اے کی جانب سے سابق ایم ڈی پی ٹی وی کے مزید جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی گئی تھی جسے عدالت نے مسترد کردیا

شاہد مسعود پر کیٹرنگ اور دیگوں کا کاروبار کرنے والی کمپنی کے ساتھ کرکٹ میچز کے نشریاتی حقوق کے معاہدے کی منظوری دینے کا الزام ہے۔
24 نومبر 2018 کو اسلام آباد کی مقامی عدالت نے پی ٹی وی بدعنوانی کیس میں گرفتار ادارے کے سابق ایم ڈی اور معروف اینکر ڈاکٹر شاہد مسعود کو 5 روزہ جسمانی ریمانڈ پر ایف آئی اے کے حوالے کیا گیا تھا۔
ہفتہ وار تعطیل کے باعث ڈاکٹر شاہد مسعود کو ایف آئی اے کی عدالت کے بجائے اسلام آباد کی مقامی عدالت میں پیش کیا گیا تھا۔
23 نومبر کو ایف آئی اے نے پی ٹی وی بدعنوانی کیس میں ادارے کے سابق ایم ڈی ڈاکٹر شاہد مسعود کو عبوری ضمانت مسترد ہونے پر گرفتار کیا تھا۔
اس سے قبل 25 اکتوبر کو اسلام آباد کی مقامی عدالت نے سینئر صحافی ڈاکٹر شاہد مسعود کو گرفتار کرکے پیش کرنے کا حکم دیا تھا، تاہم ایف آئی اے کی جانب سے اس وقت ان کی گرفتاری کی کوشش کی گئی تھی لیکن کامیابی نہیں ملی تھی۔
ڈاکٹر شاہد مسعود پر بطور ایم ڈی پی ٹی وی مبینہ طور پر 3 کروڑ 80 لاکھ روپے خوربرد کا الزام ہے۔
شاہد مسعود پر الزام ہے کہ انہوں نے ایم ڈی پی ٹی وی کے عہدے پر فائز رہتے ہوئے پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے میڈیا رائٹس حاصل کرنے کے لیے جعلی کمپنی سے معاہدہ کیا تھا، جس سے پی ٹی وی کو کروڑوں روپے کا نقصان اٹھانا پڑا تھا۔
ایف آئی اے کے مطابق شاہد مسعود نے کرکٹ میچز دکھانے کے لیے کیٹرنگ کا بزنس کرنے والی کمپنی سے معاہدے کی منظوری دی اور اس مد میں جعلی کمپنی کو 3 کروڑ 70 لاکھ روپے کی ادائیگی کی گئی۔

یہ بھی پڑھیں

فواد حسن فواد کی, ضمانت منسوخ, کرنے کی اپیل, واپس, کردی

فواد حسن فواد کی ضمانت منسوخ کرنے کی اپیل واپس کردی

اسلام آباد: احتساب کے قومی ادارے نے آشیانہ اور رمضان شوگر ملز کیس میں شہباز …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے