این ایچ ایس نے جسمانی, اعضا عطیہ, کرنے کے, حوالے سے ,بل منظور کرلیا

این ایچ ایس نے جسمانی اعضا عطیہ کرنے کے حوالے سے بل منظور کرلیا

اسلا م آباد:  سینیٹر میاں محمد عتیق شیخ کی جانب سے پیش کیے جانے والے ’ٹرانسپلانٹیشن آف ہیومن اورگنز اینڈ ٹشوز (ترمیمی) بل برائے سال 2018 میں یہ تجویز بھی پیش کی گئی کہ اعضا عطیہ کرنے والے شخص کے قومی شناختی کارڈ پر نشاندہی بھی کی جائے

سینیٹر عتیق شیخ جو مذکورہ قائمہ کمیٹی کے چیئرمین بھی ہیں، کا کہنا تھا کہ سری لنکا کو دنیا بھر میں آنکھوں کا کارنیا عطیہ کرنے کے حوالے سے قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے اور پاکستان مختلف ممالک سے عطیہ کردہ کورنیا حاصل کرتا ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ لوگوں کو اعضا عطیہ کرنے پر مائل کرنے کے حوالے سے مہم بھی چلائی گئی تھی لیکن اب اس حوالے سے قانون موجود نہ ہونے کی وجہ سے ڈاکٹرز مردہ شخص سے اعضا حاصل کرتے ہوئے ہچکچاتے ہیں کہ معلوم نہیں اس حوالے سے اس نے وصیت کی یا نہیں۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ اس لیے میں نے تجویز دی کہ عطیہ کنندگان کے شناختی کارڈ پر ایک سرخ نشان ہونا چاہیے تاکہ کسی کی فطری یا غیر فطری موت کی صورت میں ڈاکٹرز کو یہ علم ہوسکے کہ اس کے اعضا بطور عطیہ نکالے جاسکتے ہیں۔
اس بارے میں ہیومن آرگن ٹرانسپلانٹ اتھارٹی کے نمائندے کا کہنا تھا کہ حکومت کی جانب سے پیش کیے جانے والے بل میں بھی شہری کے عطیہ کنندگان ہونے کی صورت میں شناختی کارڈ اور ڈرائیونگ لائسنس پر اس کی نشاندہی کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔
بل پیش ہونے پر نمائندے نے تجویز پیش کی کہ فی الحال اس بل کو رہنے دیں کیوں کہ اس حوالے سے ایک جامع حکومتی بل جلد منظور کرلیا جائے گا، وزیر صحت عامر محمود کیانی نے بھی اس تجویز کی حمایت کی۔

یہ بھی پڑھیں

جیل میں صرف جیل مینوئل کے مطابق سہولیات فراہم کی جارہی ہیں

جیل میں صرف جیل مینوئل کے مطابق سہولیات فراہم کی جارہی ہیں

راولپنڈی: مہناز سعید کا مزید کہنا تھا کہ جیل میں انہیں غیر قانونی سہولیات فراہم …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے