ایک, ساتھ 3 طلاقیں, دینا, غیر قانونی

ایک ساتھ 3 طلاقیں دینا غیر قانونی

اسلام آباد: اسلامی نظریاتی کونسل کے آج (منگل) ہونے والے اہم اجلاس میں مذکورہ معاملے پر تبادلہ خیال کیا جائے گا

کونسل کے چیئرمین ڈاکٹر ایاز متعدد مرتبہ اور مختلف مواقع پر ایک ساتھ 3 طلاقیں دینے کے اقدام پر تحفظات کا اظہار کرچکے ہیں۔
اسلامی نظریاتی کونسل کے ایک محقق نے بتایا کہ کونسل میں شامل اراکین کی اکثریت چاہتی ہے کہ بیک وقت 3 طلاقیں دینے والے شخص کو سزا دی جائے۔
اسلامی نظریاتی کونسل کے رکن کا کہنا تھا کہ ہم پر شریعت کے مطابق تجاویز دینے کی اہم ذمہ داری ہے۔
کونسل میں بھارتی سپریم کورٹ کے ایک وقت میں 3 طلاقوں کے خلاف دیے گئے فیصلے پر گفتگو ہوئی اور اب اس معاملے پر آل انڈین مسلم پرسنل لا بورڈ کی جانب سے ارسال کیے جانے والے خط کا بھی جائزہ لیا جائے گا۔
انڈین مسلم پرسنل لا بورڈ سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف ہے لیکن اس بات کو تسلیم کرتا ہے کہ اکھٹا 3 طلاقیں دینے کے رجحان کو ختم ہونا چاہیے۔

یہ بھی پڑھیں

جیل میں صرف جیل مینوئل کے مطابق سہولیات فراہم کی جارہی ہیں

جیل میں صرف جیل مینوئل کے مطابق سہولیات فراہم کی جارہی ہیں

راولپنڈی: مہناز سعید کا مزید کہنا تھا کہ جیل میں انہیں غیر قانونی سہولیات فراہم …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے