پیراگون, ہاؤسنگ اسکینڈل, میں ضمانت قبل از, گرفتاری کی درخواست پر سماعت

پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل میں ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست پر سماعت

لاہور: جسٹس طارق عباسی کی سربراہی میں 2 رکنی بنچ نے خواجہ برادران کی پیراگون ہاؤسنگ اسکینڈل میں ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست پر سماعت کی

درخواست گزاروں نے مؤقف اختیار کیا کہ کسی قسم کی کرپشن نہیں کی، نیب کی تفتیش میں مکمل تعاون کیا، درخواست ضمانت قبل از گرفتاری منظور کی جائے۔
عدالت نے نیب کے وکیل سے استفسار کیا ‘کیا گرفتاری سے متعلق دستاویزات خواجہ برادران کو دے دی ہیں جس پر وکیل نے جواب دیا جب گرفتار کیا جائے گا، تب دستاویزات دی جائیں گی۔
عدالت نے اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کیا وہ دستاویزات عدالت کو بھی نہیں دکھائی جا سکتیں جس پر وکیل کا کہنا تھا کہ گرفتاری کے جواز سے متعلق دستاویزات نیب آفس میں ہیں۔
عدالت نے سوال پوچھا کہ کیا خواجہ سعد رفیق اور سلمان رفیق عدالت میں موجود ہیں جس پر عدالت کو بتایا گیا کہ وہ موجود ہیں، درخواست گزاروں نے کہا کہ خدشہ ہےکہ نیب کی جانب سےگرفتار کر لیا جائے گا۔
عدالت نے فریقین وکلا کے دلائل سننے کے بعد خواجہ برادران کی درخواست ضمانت میں 5 دسمبر تک توسیع کردی جب کہ عدالت نے چیئرمین نیب کو بھی ہدایت کی کہ خواجہ برادران کی تبدیلی تفتیش کی درخواست پر جلد از جلد قانون کے مطابق فیصلہ کریں۔
نیب پراسیکیوٹر کا مؤقف ہے کہ خواجہ سعد رفیق کے خلاف تین انکوائریز زیر التوا ہیں جن میں پیرا گون، آشیانہ اقبال اور پاکستان ریلوے میں کرپشن سے متعلق انکوائریز شامل ہیں۔
نیب کی جانب سے خواجہ سعد رفیق کے وارنٹ گرفتاری جاری کیے جا چکے ہیں اور اس حوالے سے نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو بھی آگاہ کر رکھا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

نواز شریف, سے سانحہ ماڈل ٹاؤن, سے, متعلق سوالات, پوچھیں, گے

نواز شریف سے سانحہ ماڈل ٹاؤن سے متعلق سوالات پوچھیں گے

لاہور:آئی جی موٹر وے اے ڈی خواجہ کی سربراہی میں جے آئی ٹی کے ارکان …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے