سعودی ولی عہد اپنے منصب پر برقرار رہیں گے، شہزادہ ترکی الفیصل

سعودی ولی عہد اپنے منصب پر برقرار رہیں گے، شہزادہ ترکی الفیصل

ریاض: سعودی شاہی خاندان کے اہم رکن شہزادہ ترکی الفیصل نے کہا ہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان اپنے منصب پر برقرار رہیں گے۔

عرب میڈیا کے مطابق سعودی شاہی خاندان کے اہم رکن شہزادہ ترکی الفیصل نے سی آئی اے کی ان رپورٹس کو مسترد کردیا ہے جس میں سعودی صحافی جمال خاشقجی کے قتل کا ملزم شہزادہ محمد بن سلمان کو قرار دیا گیا ہے۔

شہزادہ ترکی الفیصل نے کہا کہ سعودی صحافی جمال خاشقجی کا استنبول میں سعودی عرب کے قونصل خانے میں قتل ایک ناقابل قبول واقعہ ہے جس سے دنیا بھر میں سعودی عرب کے طویل عزم کو نقصان ہوا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ سعودی عرب دنیا میں اپنا کردار ادا کرتا رہے گا اور ڈونلڈ ٹرمپ کی سعودی عرب کی حمایت جاری رکھنے کا بیان مملکت کی اہمیت کو تسلیم کرتا ہے۔

شہزادہ ترکی الفیصل نے کہا کہ آئندہ ہفتے ارجنٹینا میں دنیا کے سربراہان مملکت جی 20 میں جمع ہوں یا نہ لیکن انہیں ولی عہد محمد بن سلمان سے تعلق رکھنا ہوگا۔

واضح رہے کہ محمد بن سلمان ان الزامات کے بعد گزشتہ دنوں متحدہ عرب امارات کے دورے پر گئے تھے اور اب ارجنٹینا کے دارالحکومت بیونس آئرس میں 30 نومبر کو ہونے والی جی 20 کانفرنس میں شرکت کریں گے۔

بیونس آئرس میں ہونے والی جی 20 کانفرنس میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور ترک صدر رجب طیب اردوان سمیت دیگر عالمی رہنما شریک ہوں گے جو واشنگٹن پوسٹ کے صحافی کے قتل پر ولی عہد محمد بن سلمان پر دباؤ ڈال رہے ہیں۔

خیال رہے کہ واشنگٹن پوسٹ نے اپنی ایک رپورٹ میں کہا تھا کہ امریکا کی خفیہ ایجنسی نے جمال خاشقجی کے قتل میں سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے ملوث ہونے کی رپورٹ تیار کی ہے تاہم سعودی عرب کی جانب سے ان رپورٹس کو مسترد کردیا گیا تھا۔

بھارتی وزیر خارجہ کی کرتارپور بارڈ کی تقریب میں پاکستان آنے سے معذرت

یہ بھی پڑھیں

امریکی صدر نے سعودی عرب میں اضافی فوجی بھیجنے کی منظوری دے دی

امریکی صدر نے سعودی عرب میں اضافی فوجی بھیجنے کی منظوری دے دی

واشنگٹن: فوجی بھیجنے کا فیصلہ امریکی قومی سلامتی کے اعلیٰ سطح اجلاس میں کیا گیا، …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے