کیفے حملے کا ماسٹر مائنڈ ہلاک

خیال رہے کہ یکم جولائی کو شدت پسندوں نے آرٹیسن بیکری کیفے پر حملہ کیا تھا جس میں غیر ملکیوں سمیت 22 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

کمانڈوز نے 12 گھنٹے تک کیفے کے محاصرے کرنے کے بعد 13 افراد کو بچا لیا تھا جبکہ چھ مسلح حملہ آوروں کو ہلاک اور ایک کو گرفتار کیا گیا تھا۔

سنیچر کو ہونے والی کارروائی کے بعد پولیس افسر سانور حسین نے بتایا کہ کیفے حملے کے ماسٹر مائنڈ تمیم کارروائی میں ہلاک ہو گئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ’ہم یہاں تین لاشیں دیکھ سکتے ہیں، تمیم چوہدری ہلاک ہو گیا ہے، وہ گلشن حملے کا ماسٹر مائنڈ ہے اور جمعیت المجھاہدین کا سربراہ ہے۔‘

پولیس افسر کے مطابق ڈھاکہ کے جنوب میں 25 کلومیٹر کے فاصلے پر موجود ناراینگنج نامی شہر کے علاقے پیکپارا میں شدت پسندوں کے ٹھکانے کو نشانہ بنایا گیا۔ پولیس اور شدت پسندوں کے درمیان ایک گھنٹے تک فائرنگ کا تبادلہ جاری رہا۔

خیال رہے کہ تمیم چوہدری سنہ 2013 میں کینیڈا سے بنگلہ دیش لوٹے تھے اور کالعدم تنظیم جے ایم بی کی قیادت کر رہے تھے۔

یہ بھی پڑھیں

اقوام متحدہ کو کشمیریوں کو بچانے کیلئے آگے آنا ہوگا، شاہ محمود کا یواین سربراہ کو فون

اقوام متحدہ کو کشمیریوں کو بچانے کیلئے آگے آنا ہوگا، شاہ محمود کا یواین سربراہ کو فون

اسلام آباد: بھارت کے زیر قبضہ کشمیر کی موجودہ صورتحال پر وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے