چین پاکستان کو آٹھ آبدوزیں فراہم کرے گا

قومی اسمبلی قائمہ کمیٹی دفاع کے وفد نے چیئرمین شیخ روہیل اصغر کی سربراہی میں نیول ہیڈکوارٹر کا دورہ کیا.

ترجمان پاک بحریہ کے مطابق کمیٹی کے اراکین کو خطے میں موجودہ سیکورٹی چیلنجز اور پاکستان کے میری ٹائم اثاثوں کے تحفظ اور قومی تعمیر میں پاک بحریہ کے کردار پر بریفنگ دی گئی.

کمیٹی کو سی پیک اورگوادر بندر گاہ کی ترقی کے تناظر میں پاکستان نیوی کے ترقیاتی اور اسٹرٹیجک منصوبوں سے بھی آگاہ کیا گیا.

قائمہ کمیٹی دفاع نے سی پیک اورگوادر بندرگاہ کے ترقیاتی منصوبے کے حوالے سے پاکستان نیوی کی اضافی ذمے داریوں کا اعتراف کیا ہے.

قومی اسمبلی سے جاری بیان کے مطابق نیول چیف نے کمیٹی کا نیول ہیڈ کوارٹر آمد پر استقبال کیا،چیف ڈائریکٹر سب میرین نے کمیٹی کو تفصیلی بریفنگ دی.

واضح رہے کہ چین میں بنائی گئی چار آبدوزیں پاکستان نیوی کو 2022-23 میں حوالے کی جائیں گی جبکہ باقی 4 آبدوزیں پاکستان میں کراچی شپ یارڈ میں 2028 تک تیار کی جائیں گی.

یہ بھی پڑھیں

بجلی چوری, پر, قابو پانے سے, اٹھاون ارب روپے, حاصل ہوئے

بجلی چوری پر قابو پانے سے اٹھاون ارب روپے حاصل ہوئے

اسلام آباد: بجلی کے بلوں کی وصولی میں اکیاسی ارب روپے کے اضافہ پر وزیراعظم …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے