ہم, برداشت ,نہیں کریں گے, ہمارے بادشاہ یا شہزادے کی, توہین

ہم برداشت نہیں کریں گے ہمارے بادشاہ یا شہزادے کی توہین

سعودی عرب: سعودی ولی عہد محمد بن سلمان یا ان کے والد فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے بارے میں کوئی بھی توہین آمیز گفتگو برداشت نہیں کی جائے گی

ان کا کہنا تھا کہ ’فرماں روا اور ولی عہد ہر سعودی شہری کی نمائندگی کرتے ہیں اور ہر سعودی شہری ان کی نمائندگی کرتا ہے اور ہم ایسی کسی بھی چیز کو برداشت نہیں کریں گے جو ہمارے بادشاہ یا شہزادے کی توہین کرے‘
سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے ناقد جمال خاشقجی 2 اکتوبر کو استنبول میں واقع سعودی قونصل خانے میں گئے تھے، جہاں انہیں قتل کرکے مبینہ طور پر ٹکڑے کردیے گئے۔
ابتدائی طور پر سعودی عرب کی جانب سے اس معاملے میں قتل سے متعلق انکار کیا جاتا رہا تاہم بعد میں سعودی حکام نے اعتراف کیا جمال خاشقجی کو قتل کردیا گیا جبکہ ان کے قتل کے شبے میں 21 افراد کو حراست میں بھی لے لیا گیا۔
انہوں نے کہا کہ ’ہم یہ واضح کرچکے ہیں کہ قتل کے سلسلے میں تحقیقات جاری ہیں اور ہم اس شخص کو سزا دیں گے جو اس میں ملوث ہوگا‘۔
اس موقع پر عادل الجبیر نے اس قتل کو انٹیلی جنس افسران کی جانب سے ’بددیانتی پر مبنی کارروائی‘ قرار دیتے ہوئے ترکی پر زور دیا کہ وہ قتل سے متعلق تمام ثبوتوں کے ساتھ آگے آئیں اور معلومات لیک ہونے سے روکیں۔
سعودی وزیر خارجہ نے یہ بھی کہا کہ امریکا کی جانب سے سعودی عرب پر کوئی بھی ممکنہ پابندی قلیل مدتی ہوگی۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ حال ہی میں اپنے انٹرویو کے دوران تیل کی قیمتیں کم رکھنے پر ڈونلڈ ٹرمپ نے سعودی عرب کی تعریف کی جبکہ ریاض کو جمال خاشقجی کے معاملے میں ’فری پاس‘ دینے سے متعلق تنقید کو نظر انداز کیا۔

یہ بھی پڑھیں

مختلف ملکوں کی جانب سے ٹرمپ کے اعلان کی مذمت

مختلف ملکوں کی جانب سے ٹرمپ کے اعلان کی مذمت

شام کی وزارت خارجہ نے مقبوضہ جولان کی بلندیوں کے بارے میں امریکی صدر کے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے