بھارت کا کشمیریوں پرچھروں والی بندوق کی جگہ ’’مرچوں‘‘ سے لیس گن استعمال کرنے پر غور

نئی دلی: عالمی سطح پر بدنامی اور بین الاقوامی برادری کی جانب سے شدید مذمت کے بعد بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں چھروں کی بندوق ’’پیلٹ گن‘‘ کی جگہ مرچوں سے لیس اسلحہ استعمال کرنے پر غور شروع کر دیا ہے۔

مقبوضہ کشمیر میں مودی سرکار کی جانب سے معصوم کشمیریوں پر پیلٹ گن کے استعمال پر عالمی سطح پر بھارت کو شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے جس کے بعد اب بھارتی حکومت نے مقبوضہ وادی میں بھارت مخالف مظاہروں کے دوران پیلٹ گن کی جگہ مرچوں سے لیس ’’پاوا شیلز‘‘ استعمال کرنے پر غور کررہی ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ’’پاواشیلز‘‘ جب  فائر کئے جاتے ہیں تو اس دوران مظاہرین کچھ دیر کے لئے حرکت کرنے کے قابل نہیں رہتے جب کہ  بھارتی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے بھی  گزشتہ رو اپنے بیان میں کہا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں جلد پیلٹ گن کا متبادل متعارف کرادیا جائے گا۔

واضح رہے کہ  کشمیر میں گزشتہ 2 ماہ سےمقبوضہ بھارتی فورسز کی جانب سے مظاہرین پر چھروں والی گنوں کے بے دریغ استعمال کے نتیجے میں اب تک سیکڑوں معصوم کشمیری بینائی سے محروم اور درجنوں معذور ہو چکے ہیں۔۔

یہ بھی پڑھیں

کشمیر میں شہریوں کوحق, خودارادیت, نہ دینے پر, آج, یوم سیاہ منایا, جا رہا ہے

کشمیر میں شہریوں کوحق خودارادیت نہ دینے پر آج یوم سیاہ منایا جا رہا ہے

سری نگر: مقبوضہ کشمیر پر بھارت کے غاصبانہ قبضے کے خلاف کنٹرول لائن کے اطراف …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے