ریاض: سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے کہا ہے کہ سعودی عرب انتہا پسندی کے خلاف جنگ جاری رکھے گا اور خطے میں ترقیاتی عمل کی حمایت کرے گا۔

سعودی عرب انتہا پسندی کے خلاف جنگ جاری رکھے گا، شاہ سلمان

ریاض: سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے کہا ہے کہ سعودی عرب انتہا پسندی کے خلاف جنگ جاری رکھے گا اور خطے میں ترقیاتی عمل کی حمایت کرے گا۔

عرب میڈیا کے مطابق شاہ سلمان بن عبدالعزیز ریاض میں سعودی شوریٰ کونسل کے ساتویں اجلاس کے افتتاح کے موقع پر خطاب کررہے تھے، انہوں نے کہا کہ مملکت اسلامی شریعت کی پاسداری کررہی ہے اور اس نے اعتدال پسندی اور رواداری کی اقدار اختیار کی ہیں۔

شاہ سلمان نے تیل کے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب کی پالیسی تیل پیدا کرنے والے دوسرے ممالک کے ساتھ تعاون اور رابطے پر مبنی ہے۔

انہوں نے کہا کہ سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان انسانی وسائل کی ترقی اور نئی نسل کو آنے والے دور کے لیے تیار کرنے پر اپنی توجہ مرکوز کررہے ہیں۔

سعودی فرمانروا نے کہا کہ سعودی شہری مملکت کی ترقی میں ایک بنیادی قوت کی حیثیت رکھتے ہیں اور ترقیاتی منصوبے اطمینان بخش شرح سے اپنے اہداف حاصل کررہے ہیں۔

شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے کہا کہ جب تک فلسطینیوں کو ان کے حقوق نہیں مل جاتے اس وقت تک فلسطینی کاز سعودی عرب کی اولین ترجیح رہے گا۔

یمن کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سعودی عرب کی اس بحران میں شرکت کوئی انتخاب نہیں تھا بلکہ حوثی باغیوں سے نمٹنے کے لیے یہ ایک فرض تھا۔

انہوں نے کہا کہ ایران دہشت گرد جماعتوں کی نہ صرف حمایت کررہا ہے بلکہ ان کی مالی معاونت میں بھی ملوث ہے، ایران اپنے ہمسایوں کے معاملات میں بھی دخل اندازی کرتا ہے۔

شاہ سلمان نے کہا کہ سعودی عرب عراق کے ساتھ تعلقات میں مزید بہتری کا بھی خواہاں ہے۔

سعودی عرب نے ایک ارب ڈالر پاکستان منتقل کردیئے

 

یہ بھی پڑھیں

مشرقی فرانس میں ایک مسجد پر کار سے حملہ

مشرقی فرانس میں ایک مسجد پر کار سے حملہ

فرانس کے مشرقی علاقے کی ایک مسجد پر گاڑی سے حملہ کیا گیا ہے رشاٹوڈے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے