خاشقجی قتل، سترہ سعودی شہریوں کے خلاف نمائشی پابندیاں

خاشقجی قتل، سترہ سعودی شہریوں کے خلاف نمائشی پابندیاں

امریکا نے صحافی جمال خاشقجی کے قتل میں ملوث ولی عہد محمد بن سلمان کے قریبی ساتھیوں سمیت سترہ سعودی شہریوں پر اقتصادی پابندیاں عائد کردی۔

خاشقجی قتل کیس کے حوالے سے جن سعودی عہدیداروں پر پابندی عائد کی گئی ہے ان میں سعودی ولی عہد کے انتہائی قریبی ساتھی اور مشیر دربار سعود القحطانی اور استنبول میں سعودی قونصلر جنرل محمد العتیبی کے نام بھی شامل ہیں۔

قابل ذکر ہے کہ سعودی حکومت اور خاص طور سے ولی عہد بن سلمان پر کڑی تنقید کرنے والے صحافی جمال خاشقجی دو اکتوبر کو استنبول کے سعودی قونصل خانے میں داخل ہونے کے بعد لاپتہ ہوگئے تھے۔

سعودی حکومت نے شدید عالمی دباؤ کے باعث اٹھارہ روز کی تردید اور تضاد بیانیوں ے بعد اس بات کا اعتراف کیا تھا کہ جمال خاشقجی کو استنبول میں واقع اس کے قونصل خانے میں جھگڑے کے دوران قتل کردیا گیا تھا۔

امریکی وزارت خارجہ کی جانب سے یہ اعلان ایسے وقت میں کیا گیا جب صدر ٹرمپ واضح کرچکے ہیں سعودی عرب کو اسلحے کی فراہمی کسی صورت میں بند نہیں کی جائے گی۔

شمالی کوریا کا جدید ترین ہتھیار کا تجربہ

یہ بھی پڑھیں

ٹرمپ کو لگام نہ ڈالی گئی تو لوگ مریں گے: نکی ہیلی

ٹرمپ کو لگام نہ ڈالی گئی تو لوگ مریں گے: نکی ہیلی

نکی ہیلی نے کہا ہے کہ وائٹ ہاؤس کے دو اہم مشیروں نے ان سے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے