,پشاور,ایس پی ,طاہر خان داوڑ ,کی ,نماز جنازہ, ادا ,کردی گئی

پشاور: ایس پی طاہر خان داوڑ کی نماز جنازہ ادا کردی گئی

پشاور : پشاور پولیس لائن میں مقتول سپرنٹنڈنٹ پولیس (ایس پی) طاہر خان داوڑ کی نماز جنازہ ادا کردی گئی۔

وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان، گورنر شاہ فرمان، وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی اور آئی جی خیبر پختونخوا نے نماز جنازہ میں شرکت کی۔

صوبائی وزیر شوکت یوسف زئی، ترجمان کے پی حکومت اجمل وزیر، کور کمانڈر پشاور لیفٹننٹ جنرل شاہین مظہر محمود اور کمانڈنٹ فرنٹئیر کانسٹبلری معظم انصاری سمیت اعلیٰ پولیس وسول حکام بھی نمازجنازہ میں شریک ہوئے۔

نماز جنازہ سے قبل خیبر پختونخوا پولیس کے دستے نے شہید ایس پی طاہر خان داوڑ کو سلامی دی۔

ایس پی کا واقعہ پولیس کیلئے ایک سوالیہ نشان ہے، وزیر مملکت برائے داخلہ

ادھر وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی نے سینیٹ کے اجلاس کے دوران بتایا کہ ایس پی طاہر خان داوڑ پاکستان کا غیرت مند بیٹا تھا اور ان سے قبل ان کے بھائی اور بھابی کو بھی شہید کیا گیا، ایس پی دہشت گردوں کے نشانے پر تھے۔

پنجاب اسمبلی میں سینیٹ کی دونوں نشستیں تحریک انصاف نے جیت لیں

انہوں نے سینیٹ اراکین کو بتایا کہ آخری پیغام گھر والوں کو ملا کہ ایس پی طاہر داوڑ محفوظ ہیں، ایس پی طاہر خان داوڑ کو پنجاب میں میاں والی کے راستے بنوں اور پھر افغانستان لے جایا گیا۔

وزیر مملکت برائے داخلہ نے بتایا کہ 28اکتوبرکو ایس پی طاہر داوڑ کے لاپتا ہونے کی ایف آئی آر درج کی گئی، یہ واقعہ پولیس کے لیے ایک سوالیہ نشان ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نے بھی ایس پی کے واقعے کی رپورٹ طلب کرلی ہے۔

وزیر مملکت برائے داخلہ نے سابق دور حکومت کے سیف سٹی منصوبے کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ سیف سٹی پروجیکٹ کہاں ہے؟ سابق حکومت جواب دے، سیف سٹی کے ایک ہزار 8 سو سے زائد کیمرے ناکارہ ہیں، سیف سٹی میں لگائے گئے کیمروں کی انکوائری ہونی چاہیے۔

یہ بھی پڑھیں

آئس نشے کی روک تھام, کے, لیے, قانون سازی کرنے, کا فیصلہ

آئس نشے کی روک تھام کے لیے قانون سازی کرنے کا فیصلہ

پشاور: مجوزہ قانون کے تحت آئس بنانے والے کو پچاس لاکھ روپے جرمانہ اور سزائے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے