عالمی, مالیاتی, ادارے (آئی ایم ایف) کے درمیان بات, چیت کا آغاز, ہوگیا

عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) کے درمیان بات چیت کا آغاز ہوگیا

اسلام آباد: ان مذاکرات میں اسلام آباد کو درپیش مالی مشکلات اور ادائیگیوں کا توازن بہتر بنانے کے لیے درکار رقم کے سلسلے میں گفتگو کی جائے گی

معاشی خلا کو پر کرنے کے لیے حاصل کیا جانے والا فنڈ 1980 سے اب تک پاکستان کا 13واں آئی ایم ایف پروگرام ہوگا۔
اس سلسلے میں تکنیکی امور پر گفتگو سے قبل وزیر خزانہ اسد عمر کی جانب سے بیان سامنے آیا کہ چین اور سعودی عرب کے تعاون سے فوری طور پر ادائیگیوں کے توازن کا بحران بڑی حد تک کم ہوگیا ہے تاہم انہوں سے اس حوالے سے کوئی اعداد و شمار فراہم نہیں کیے۔
اس ضمن میں وزارت خزانہ کے سینئر عہدیدار کا کہنا تھا کہ ابتدائی 3 روز میں اعدادو شمار پور غور خوص کیا جائے گا جس کے بعد پیر سے باقاعدہ طور پر پالیسی مذاکرات کیے جائیں گے۔
پاکستان کے لیے آئی ایم ایف کا کوٹہ تقریباً 6 ساڑھے6 ارب ڈالر ہے تاہم حکام کا کہنا ہے کہ کچھ معاملات کے پیشِ نظر اس میں اضافہ کیاجاسکتا ہے پھر بھی آئی ایم ایف سے حاصل ہونے والے فنڈ کا اصل حجم 20 نومبرکو طے کیا جائے گا۔
عہدیدار کا کہنا تھا کہ ابھی فنڈ کی رقم کے بارے میں کچھ بھی کہنا قبل از وقت ہے، خیال رہے کہ پاکستان نے آخری آئی ایف پروگرام 2013 میں حاصل کیا تھا۔
حکام کے مطابق آئی ایم ایف سے ہونے والی گفتگو میں پاکستان سعودی عرب اور چین سے حاصل ہونے والی مالی امداد کی تفصیلات بھی فراہم کرے گا اس کے ساتھ انہیں اندرونِ ملک اور بیرونِ ملک رقم کی منتقلی سے بھی آگاہ کیا جائے گا۔
آئی ایم ایف کی ٹٰیم پاکستانی معیشت میں سالانہ مالیاتی فرق کی پیمائش کر کے معیشت کو ادائیگیوں کے توازن کے لیے فوری طور پر درکار امداد کا جائزہ لے گا۔
وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ پاکستان کوآئندہ سال جون تک ادائیگیوں کے توازن کے لیے تقریباً 12 ارب ڈالر کی ضرورت ہے۔

یہ بھی پڑھیں

مولانا فضل الرحمٰن کی جانب سے تجویز کردہ مارچ سے کسی دباؤ کا شکار نہیں

مولانا فضل الرحمٰن کی جانب سے تجویز کردہ مارچ سے کسی دباؤ کا شکار نہیں

اسلام آباد:وزیراعظم سے ملاقات کرنے والے علما میں اسلامی نظریاتی کونسل (سی آئی آئی)، متحدہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے