امریکہ ایٹمی معاہدے کو کمزور نہیں کر سکتا۔ ایران

امریکہ ایٹمی معاہدے کو کمزور نہیں کر سکتا۔ ایران

ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے کہا ہے کہ امریکی حکام ڈیڑھ برس کی کوشش کے بعد اب بھی ایٹمی معاہدے کو کمزور نہیں کر سکتے۔

ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے پیر کے روز ایک بیان میں کہا ہے کہ مذاکرات، توازن کے قیام اور مفاہمت کے حصول کا ذریعہ ہیں تاکہ مفادات کا تحفظ کیا جا سکے اور آج ایٹمی معاہدہ اس حد تک ایرانی قوم کے مفادات میں واقع ہوا ہے کہ امریکہ ذلت کے ساتھ اس معاہدے سے نکل گیا ہے۔انھوں نے کہا کہ عالمی برادری کی نظر میں ایٹمی معاہدہ ایران کی سفارتی کامیابی ہے جبکہ امریکہ کی تمام تر خلاف ورزیوں اور دھونس دھمکیوں کے باوجود یہ معاہدہ دنیا میں واشنگٹن کی شکست کا باعث بنا ہے۔ایران کے وزیر خارجہ نے امریکہ کے حالیہ طرز عمل کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ، ایران کے تیل کی برآمدات کو صفر تک پہنچانے کے دعوے کے باوجود اپنے اس دعوے سے پیچھے ہٹنے پر مجبور ہو گیا۔محمد جواد ظریف نے کہا کہ آج وہ دن آ گیا ہے کہ امریکی ڈالر سقوط کی راہ پر چل نکلا ہے اس لئے کہ امریکیوں نے ڈالر کے استعمال میں زیادہ روی کا مظاہرہ کر کے ایک ایسے عمل کا آغاز کر دیا ہے جو سرانجام امریکیوں کے ہی نقصان پر منتج ہو گا۔دوسری جانب ایران کے دفتر خارجہ کے ترجمان بہرام قاسمی نے ملکی و غیر ملکی نامہ نگاروں سے گفتگو میں ایران کے خلاف امریکی پابندیوں کے نفاذ کے بعد یورپی ملکوں کے اقدامات اور مالی سسٹم کے قیام سے متعلق ان کی کارروائیوں کے بارے میں کہا ہے کہ اس عمل میں پیشرفت جاری ہے۔ترجمان وزارت خارجہ بہرام قاسمی نے امریکی پابندیوں کی بحالی اور ان کو ناکام و غیر موثر بنانے کے بارے میں بھی کہا کہ امریکہ کا یہ اقدام ایک طرح سے خود اپنے پیر پر کلہاڑی مارنے کے مترادف ہے۔ یہ ملک تمام بین الاقوامی معاہدوں کو پیروں تلے روندتا ہے جبکہ ایران کے خلاف امریکی پابندیوں نے اس بات کو بھی ثابت کر دیا کہ واشنگٹن بین الاقوامی سطح پر رائج طریقوں پر عمل نہیں کر سکتا اور خود ہی اکیلا پڑ گیا ہے۔ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ دنیا کے بیشتر ملکوں کی جانب سے امریکہ کا ساتھ نہ دیئے جانے کے باوجود واشنگٹن کی طرف سے پابندیوں کا اقدام نفسیاتی جنگ کے علاوہ اور کچھ نہیں ہے۔ترجمان وزارت خارجہ بہرام قاسمی نے کہا کہ حالیہ مہینوں کے دوران امریکی حکام کے مختلف قسم کے بیانات اور دعؤوں کے باوجود خود وہ اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ امریکیوں کی زور و زبردستی کی پالیسی سے توانائی کی منڈی پر کوئی اثر نہیں پڑ رہا ہے اور امریکہ کی جانب سے بعض ملکوں کو چھوٹ دیئے جانے کے اعلان سے امریکی موقف میں پسپائی کا پتہ چلتا ہے

عید میلاد النبی، دبئی حکومت نے سرکاری تعطیل کا اعلان کردیا

یہ بھی پڑھیں

سعودی وزیرِ خارجہ نے کشمیر کے سوال پر بھارتی صحافی کا منہ بند کرا دیا

سعودی وزیرِ خارجہ نے کشمیر کے سوال پر بھارتی صحافی کا منہ بند کرا دیا

نئی دہلی: سفارتی محاذ پر بھارت کو ایک اور دھچکا پہنچا ہے، سعودی وزیرِ خارجہ نے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے