سپریم کورٹ کے تین رکنی, بینچ نے, ایگزیکٹ, جعلی ڈگری کیس, کی سماعت

سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے ایگزیکٹ جعلی ڈگری کیس کی سماعت

اسلام آباد: ایگزیکٹ جعلی ڈگری اسکینڈل میں چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار نے کراچی کی ٹرائل کورٹ کو 6 ہفتے میں کیس کا فیصلہ سنانے کا حکم دے دیا

چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ ہم اس مقدمے میں التوا نہیں دیں گے، ایگزیکٹ والے کدھر ہیں؟
ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ کراچی، اسلام آباد اور پشاور میں مقدمات زیر سماعت ہیں۔
چیف جسٹس نے کہا کہ یہ انتہائی اہم مقدمات ہیں اس لیے التوا کی درخواست مسترد کرتے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کے ڈائریکٹر جنرل (ڈی جی) اپنے امور چھوڑ کر آتے ہیں،2015 سے خصوصی عدالت میں ایک مقدمہ چل رہا ہے اس کے باوجود اتنی تاخیر کیوں ہو رہی ہے؟
جسٹس ثاقب نثار نے کراچی کی ٹرائل کورٹ کو کیس کا فیصلہ 6 ہفتے میں سنانے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ ہم 6 ہفتوں کا وقت دے رہے ہیں، چاہے دن رات مقدمہ سنیں لیکن فیصلہ کریں اور ہم خصوصی حج کو حکم دیتے ہیں کہ وہ 6 ہفتوں میں کیس کا فیصلہ کریں، اگر مقررہ وقت میں فیصلہ نہ کیا گیا تو ہم وضاحت مانگیں گے۔
ڈی جی ایف آئی اے نے عدالت کو بتایا کہ کراچی میں ایک مقدمے کی آئندہ سماعت 3 نومبر کو ہوگی۔
چیف جسٹس نے پوچھا کہ کیا ملزمان گرفتار ہیں؟ جس پر ڈی جی ایف آئی اے کا کہنا تھا کہ ملزمان ضمانت پر ہیں۔
چیف جسٹس نے کہا کہ اس معاملے سے ملک کی بدنامی ہوئی، جتنی ملک کی بدنامی ہوئی وہ صرف سپریم کورٹ ہی دھوئے گی جبکہ اس بندے کو صرف سپریم کورٹ ہی پکڑ سکتی ہے۔
کیس کی سماعت 31 اکتوبر بروز بدھ تک ملتوی کردی گئی۔

یہ بھی پڑھیں

سندھ طاس معاہدہ ختم, کرنے کی, دھمکی دی ,جو سنگین, غلطی ہوگی

سندھ طاس معاہدہ ختم کرنے کی دھمکی دی جو سنگین غلطی ہوگی

اسلام آباد: وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ کوپلوامہ حملے کے بعد …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے