عراق میں دو کمسن بچوں کے خود کش حملے، تیسرے کو گرفتار کرلیا گیا

بغداد: عراق کے شہر کرکوک میں 2 کمسن خود کش بمباروں نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا جب کہ تیسرے  بمبار کو پولیس نے حراست میں لے لیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق عراق کے شمالی شہر کرکوک میں مختلف مقامات پر 2 کمسن خود کش بمباروں نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا تاہم دونوں واقعات میں  ہلاکت کی اطلاع نہیں ملی جب کہ پولیس نے مسجد کے قریب خود کو دھماکے سے اڑانے کی کوشش کرنے والے تیسرے کمسن خود کش بمبار کو حراست میں لے لیا۔

پولیس کے مطابق مشکوک بچے کو اس وقت حراست میں لیا گیا جب وہ خود کو مسجد کے قریب دھماکا خیز مواد سے اڑانے کی تیاری کر رہا تھا۔ 12 سے 13 سالہ عمر کے لڑکے نے بارسلونا فٹبال ٹیم کے نامور کھلاڑی لیونل میسی کے نام کی ٹی شرٹ پہن رکھی تھی جو مشکوک انداز میں مسجد کے مرکزی دروازے کے قریب پہنچنے کی کوشش کر رہا تھا۔

3

سیکیورٹی فورسز نے بچے کو حراست میں لے کراس کی کمر پر باندھا گیا دھماکا خیز مواد سے بھرا بیلٹ بھی قبضے میں لے لیا جب کہ گرفتار کئے گئے بمبار سے تفتیش شروع کردی گئی ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز ترکی میں کمسن خودکش بمبار نے شادی کی تقریب میں گھس کر خود کو دھماکے سے اڑالیا تھا جس کے نتیجے میں 50 افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہوگئے تھے۔

یہ بھی پڑھیں

امریکا نے ایرانی آئل ٹینکر کو قبضے میں لینے کے لیے وارنٹ جاری کردیے

امریکا نے ایرانی آئل ٹینکر کو قبضے میں لینے کے لیے وارنٹ جاری کردیے

واشنگٹن: امریکی محکمہ قانون نے پکڑے گئے ایرانی آئل سپر ٹینکر کو قبضے میں لینے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے