امن وامان کی صورتحال پچھلے5سال میں بتدیج بہترہوتی جارہی ہے

امن وامان کی صورتحال پچھلے5سال میں بتدیج بہترہوتی جارہی ہے

 کراچی : ڈی جی رینجر سندھ نے کہا کہسیاست اورجرائم کا گٹھ جوڑ سامنے آیا، تو  آپریشن کا فیصلہ کرنے والی لیڈر شپ نے ہمیں بٹھا کر کہا کہ کراچی سے جرائم ختم کرنے ہیں۔

میجر جنرل محمد سعید کا کہنا تھا کہ اگر بانی ایم کیو ایم واپس پاکستان آئے، تو انھیں قانون کے تحت گرفتار کیا جائے گا. کراچی آپریشن کے دوران بہت سے لوگ بیرون ملک بھاگ گئے اور روپوش ہوگئے۔

انھوں نے کہا کہ دہشت گردی، ٹارگٹ کلنگ سے 31ہزار افراد کی جانیں گئیں، 1985سے1995تک 21ہزارلوگوں کی جانیں گئیں،1985 سے ستمبر 2013 تک مجموعی طور پر 92 ہزار لوگ مرے۔ ایدھی، سی پی ایل سی اور ہمارا ریکارڈ ملایاجائے تو مرنےوالوں کی تعدادزیادہ ہے۔

کراچی میں ہر ماہ دہشت گردی کے 7 واقعات ہوتے تھے، سیکیورٹی وپولیس اہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ، بم دھماکے ،دستی بم حملے ہوتے تھے، سیاسی لیڈرشپ نے قانون بنایا اور ایک فورس کو اختیارات دیئے، یہ اختیارات 1992میں مل جاتے تو 2013میں کراچی کی صورتحال یہ نہ ہوتی۔

ڈی جی رینجرز نے کہا کہ ستمبر2013 کے بعد سے 14800سےزائد آپریشن میں 11088لوگوں کو گرفتارکیاگیا، 2017اور2018میں بھی 2،2ہزار کےقریب لوگ گرفتارہوئے۔

دہشت گردی میں 2012اور2013 میں کئی لوگوں کی جانیں گئیں، 2017اور2018میں دہشتگردی سے کسی کی جان نہیں گئی، 2017میں اغوابرائے تاوان کے 30واقعات ہوئے جو حل کرلئےگئے، اغوا کے جعلی واقعات کا سوشل میڈیا پر بہت پروپیگنڈا کیا گیا۔

انھوں نے کہا کہ کراچی میں رواں سال صرف2بچوں کے اغوا کاواقعہ ابھی حل نہیں ہوا، چاقو بردار شخص کو نہ پکڑنا ہماری اورپولیس کی ناکامی ہے، البتہ امن وامان کی صورتحال پچھلے5سال میں بتدیج بہترہوتی جارہی ہے۔

کراچی میں جتنی ٹارگٹ کلنگ کا شکار پولیس ہوئی ہے اتنا کسی شہر میں نہیں ہوئی، سوسائٹی کو ملکر پولیس کےساتھ کھڑے ہوناچاہئے اور تعاون کرناچاہیے۔ اسٹریٹ کرائم ختم کرناچاہتے ہیں تو پولیس کو آئی ٹی شعبے میں بہتربناناہوگا۔

عزیر بلوچ رینجرز کی کسٹڈی میں اس وقت تھا جب گرفتار ہوا تھا، عزیر بلوچ کا کیس ملٹری کورٹ میں ہے اس پرمتعلقہ حکام ہی بتاسکتے ہیں، جرائم سےمتعلق بہت سی جےآئی ٹی میں حماد صدیقی کا نام موجود ہے، بلدیہ فیکٹری کیس میں گرفتارزبیر چریا اور رحمان بھولا جیل میں ہے۔

 

یہ بھی پڑھیں

لیبارٹریوں کے معیار کو جانچنے کیلیے 11 رکنی ٹاسک فورس تشکیل

لیبارٹریوں کے معیار کو جانچنے کیلیے 11 رکنی ٹاسک فورس تشکیل

کراچی: سندھ ہیلتھ کیئر کمیشن نے سندھ بھر میں قائم لیبارٹریوں کے معیار کو جانچنے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے