لوگ 37 برس تک, غلط قبلہ رخ ,پر نماز ادا, کرتے رہے

لوگ 37 برس تک غلط قبلہ رخ پر نماز ادا کرتے رہے

انقرہ: مسجد کو 1981 میں تعمیر کیا گیا تھا لیکن مسجد کا محراب اور منبر غلط سمت میں بنا دیا گیا تھا، جس کو 37 برس بعد امام مسجد کی نشاندہی پر ٹھیک کر دیا گیا ہے

ترکی میں واقع اس مسجد کی انتظامیہ یہ جاننے سے غافل رہی کہ نمازی گزشتہ 37 برس سے غلط سمت میں نماز ادا کررہے ہیں۔
اس بات کا انکشاف گزشتہ برس تعینات ہونے والے امام عیسیٰ کایا نے کیا اور فوری طور پر کعبے کا رخ درست کیا۔
انتظامیہ اور امام مسجد نے مشاورت کے بعد محراب کو نہ توڑنے کا فیصلہ کیا جبکہ نمازیوں کو درست سمت سے آگاہ کرنے کے لیے قالین پر سفید رنگ سے تیر کے نشانات بنا دیے تاکہ کعبۃ اللہ کی طرف منہ کر کے نماز ادا کی جائے۔
مسجد انتظامیہ کو یہ خدشہ تھا کہ اگر نمازیوں کو اس بات کا علم ہوا تو معاملہ خراب ہوسکتا ہے البتہ امام نے غلطی سے متعلق لوگوں کو آگاہ کرتے ہوئے قرآن و احادیث کی روشنی میں مسئلہ بیان کیا جس پر نمازیوں نے انہیں بہت سراہا۔
حکام نے تصدیق کی کہ مسجد کی تعمیر کے وقت انجینئر کی غلفت اور لاپرواہی کی وجہ سے محراب بنانے میں غلطی ہوئی جسے اُس نے چھپا کر رکھا۔

یہ بھی پڑھیں

سعودی وزیرِ خارجہ نے کشمیر کے سوال پر بھارتی صحافی کا منہ بند کرا دیا

سعودی وزیرِ خارجہ نے کشمیر کے سوال پر بھارتی صحافی کا منہ بند کرا دیا

نئی دہلی: سفارتی محاذ پر بھارت کو ایک اور دھچکا پہنچا ہے، سعودی وزیرِ خارجہ نے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے