شعبہ انسانی حقوق, میں ماسٹرز, پروگرام میں, داخلہ مل گیا

شعبہ انسانی حقوق میں ماسٹرز پروگرام میں داخلہ مل گیا

یروشلم:فلسطینی نژاد امریکی طالبہ لارا القاسم کو اسرائیلی یونیورسٹی کے شعبہ انسانی حقوق میں ماسٹرز پروگرام میں داخلہ مل گیا

وہ پہلے سیشن میں شرکت کے لیے دو ہفتے قبل اسرائیل پہنچی تھیں تاہم طالبہ کو بن گوریان ایئرپورٹ پر روک کر واپس جانے کا حکم دیا گیا تھا۔
اسرائیلی حکومت کی جانب سے طالبہ پر الزم عائد کیا گیا تھا کہ وہ فلوریڈا یونیورسٹی میں تعلیم کے دوران ’ انصاف برائے فلسطین ‘ نامی تنظیم کی صدر رہیں اور اپنی صدارت کے دوران اسرائیل مخالف مہم بی ڈی ایس ( BoyCott Divestment and Sanction Movement ) کا حصہ بھی رہی ہیں۔
فلوریڈا سے اسرائیل پہنچنے والی 23 سالہ طالبہ نے غیرمنصفانہ فیصلے کے خلاف اسرائیلی سپریم کورٹ سے رجوع کیا جہاں انصاف کے حصول کے لیے دو ہفتے لگ گئے تاہم خوش آئند بات یہ ہے کہ عدالت نے طالبہ کی درخواست قبول کرتے ہوئے اسرائیل میں داخل ہونے اور تعلیم جاری رکھنے کی اجازت دے دی۔
ہیبریو یونیورسٹی نے عدالتی فیصلے پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہم اپنی نئی طالبہ کو خوش آمدید کہتے ہیں اور امید ہے کہ وہ آئندہ ہفتے انسانی حقوق اور عبوری انصاف میں ماسٹرز کے لیے شروع ہونے والی کلاسوں میں شرکت کریں گی۔

یہ بھی پڑھیں

بوکھلاہٹ کے شکار بھارتی تاجروں نے پاکستان سے تمام آرڈر منسوخ کر دیے

بوکھلاہٹ کے شکار بھارتی تاجروں نے پاکستان سے تمام آرڈر منسوخ کر دیے

نئی دہلی: پلوامہ حملے کے بعد بھارتی حکومت کی جانب سے پاکستان پر لگائے جانے والے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے