مرکزی شاہراہ خیابان سہروردی, پر, رکاٹیں رکھنے, سے , متعلق کیس ,کی سماعت

مرکزی شاہراہ خیابان سہروردی پر رکاٹیں رکھنے سے متعلق کیس کی سماعت

اسلام آباد:سپریم کورٹ نے ملک کی اہم ترین خفیہ ایجنسی انٹر سروسز انٹیلی جنس (آئی ایس آئی) کو وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں قائم اپنے ہیڈ کوارٹرز کے سامنے سڑک سے رکاوٹیں ختم کرنے کیلئے مزید ایک ماہ کا وقت دے دیا

سماعت کے دوران حساس ادارے کے نمائندے کی جانب سے بند لفافے میں رپورٹ پیش کی گئی، جسے عدالت عظمیٰ کے معزز ججز نے پڑھ کر وزارت دفاع کے نمائندے کو واپس کردیا۔
چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ گزشتہ سماعت پر ہم نے ڈی جی آئی ایس آئی کو بلایا تھا، آپ کو 2 ماہ کا وقت پہلے دے چکے ہیں، ابھی تک سڑک کیوں نہیں کھولی گئی۔ اس پر وزارت دفاع کے نمائندے نے بتایا کہ جگہ تقریباً صاف ہوگئی ہے لیکن ابھی ٹریفک کے لیے نہیں کھولی گئی۔
اس پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ خالی سڑک کا عوام کو کیا فائدہ ہوگا، جب استعمال نہیں ہوگی، یہ بنیادی انسانی حقوق کا معاملہ ہے۔
انہوں نے کہا کہ بھارت میں ایک راستے پر گاندھی کا مجسمہ لگا ہوا تھا، جب سڑک بن گئی تو اس مجسمے کو گرا دیا گیا۔
دوران سماعت وزارت دفاع کے نمائندے نے کہا کہ عمارت میں اہم اور حساس آلات ہیں، جنہیں منتقل کرنے میں وقت لگ رہا ہے، اس پر چیف جسٹس نے کہا کہ آپ کو مزید کتنا وقت چاہیے، ہم آپ کو دیتے ہیں، جس پر نمائندے نے کہا کہ 2 سے 3 ہفتے مزید لگ جائیں گے۔
بعد ازاں عدالت نے سڑک کھولنے کے لیے مزید 4 ہفتوں کی مہلت دے دی۔

یہ بھی پڑھیں

پاکستان، افغانستان میں ہونے والے حالیہ دہشت گردی بے بنیاد الزامات مسترد

پاکستان، افغانستان میں ہونے والے حالیہ دہشت گردی بے بنیاد الزامات مسترد

اسلام آباد: این ڈی ایس کی جانب سے ایک بیان میں دعویٰ کیا گیا تھا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے